تفتیشی پولیس افسروں کیلئے نئے ایس او پیز  فائنل‘خلاف ورزی پر کارروائی کا فیصلہ

تفتیشی پولیس افسروں کیلئے نئے ایس او پیز  فائنل‘خلاف ورزی پر کارروائی کا ...

  

  ملتان (وقا ئع نگار) پولیس افسران نے تبادلہ شدہ تھانیدار کا اپنے عہدہ کا چارج چھوڑنے سے قبل زیر تفتیش مقدمات (بقیہ نمبر53صفحہ 7پر)

یکسو  اور چالان سینٹ ٹو کورٹ کروانے کو لازمی قرار دے دیا ہے۔جبکہ تھانیدار کی بغیر کلیئرنس کے  تھانہ سے روانگی روک دی گئی۔حکم عدولی کی صورت میں محکمانہ کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اس حوالے سے ذرائع سے معلوم ہوا ہے ملتان ڈسٹرکٹ کے تمام تھانوں میں یہ پریکٹس عام تھی۔کہ کسی بھی تھانیدار کا ایک جگہ سے دوسری جگہ تبادلہ ہوتا تھا۔تو اپنے ذمے مقدمات کی مثلوں کو جوں کی توں چھوڑ کر چلے جاتے تھے۔جسکی وجہ سے شہریوں دربدر کا دھکے کھاتا تھا۔اور اس طرح کے عمل سے دوسرے  تفتیش کو مقدمہ  میرٹ پر حل کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔ ضلعی پولیس نے ایسے اقدام کی روک تھام کیلئے نیا ہدایت نامہ جاری کیا  ہے۔جس میں واضح الفاظ میں کہا گیا ہے کہ آئندہ کسی بھی تفتیشی افسر کا تبادلہ ہوگا۔تو وہ سب سے پہلے اپنے پاس زیر تفتیش مقدمات کو یکسو کرے گا۔اور انکو ساتھ کے ساتھ سینٹ ٹو کورٹ کروانے کا پابند ہوگا۔ایس ایچ اوز اور انچارج انوسٹی گیشن  سے اپنے پینڈنگ مقدمات نا ہونے بارے بھی سرٹیفکیٹ  لیکر پھر اپنانے عہدہ سے نئے تبادلہ کی جانب  روانگی کرے گا۔عدم تعمیل کی صورت میں متعلقہ ایس ایچ او اور انچارج انوسٹی گیشن آفسیر کو ذمے دار ٹھہرایا جائے گا۔

نئے ایس او

مزید :

ملتان صفحہ آخر -