پوٹھوار میں آبپاشی وسائل بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں‘ حسین جہانیاں گردیزی 

 پوٹھوار میں آبپاشی وسائل بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں‘ حسین جہانیاں ...

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) حکومت پنجاب خطہ پوٹھوار میں آبپاشی کے وسائل بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہی ہے۔ خطہ پوٹھوار میں زرعی منصوبوں کی بروقت تکمیل (بقیہ نمبر3صفحہ 6پر)

کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں۔ ان خیالات کا اظہار وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے پیر مہر علی شاہ بارانی زرعی یونیورسٹی اور محکمہ زراعت پنجاب کے تمام شعبہ جات کی کارکردگی کے جائزہ اجلاس کی صدارت کے دوران کیا۔ اجلاس میں ڈاکٹر قمر الزمان وائس چانسلر بارانی زرعی یونیورسٹی، عبدالستار عیسانی ڈائریکٹر جنرل ایجنسی فار بارانی ایریا ڈویلپمنٹ، ڈاکٹر انجم علی ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع) پنجاب، سجاد حیدر ڈائریکٹر زراعت (توسیع)، محمد اکرم ڈائریکٹر سائل کنزرویشن، ڈاکٹر محمد اقبال چوہان ڈائریکٹر واٹر مینجمنٹ، عارف محمودانجینئر ایگریکلچر فیلڈ ونگ کے علاوہ دیگر افسران نے شرکت کی۔ وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے کہا کہ خطہ پوٹھوار میں پھلوں اور سبزیوں کی کاشت کے بڑھنے سے ملکی زرعی ترقی کے واضح امکانات موجود ہیں۔ محکمہ زراعت پنجاب اور پیر مہر علی شاہ بارانی زرعی یونیورسٹی کے باہمی تعاون سے کاشتکاروں کی فنی رہنمائی کریں۔ خطہ پوٹھوار میں پھلوں اور چارہ جات کی کاشت کو بڑھانے کے لئے اقدامات کیے جائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ زراعت پنجاب بارانی زرعی یونیورسٹی کے طلباء کی عملی تربیت کے لئے مواقع فراہم کرے۔ پیر مہر علی شاہ بارانی زرعی یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر قمرالزمان نے بریفنگ دیتے ہوے بتایا کہ یونیورسٹی ہذا بارانی علاقوں کی زراعت کے مسائل کو حل کرنے کیلئے تحقیق کر رہی ہے۔ یونیورسٹی میں زرعی انجینئرنگ کے شعبے کو وسعت دی جا رہی ہے تاکہ بارانی علاقوں سے مطابقت رکھنے والی زرعی ٹیکنالوجی کو متعارف کروائی جائے۔ اس موقع پر وزیر زراعت پنجاب کو بتایا گیا کہ شعبہ اصلاح آبپاشی کی طرف سے خطہ پوٹھوار میں آبپاشی کے مسائل کو حل کرنے کیلئے رین واٹر ہارویسٹنگ کا منصوبہ جاری ہے جس کے ذریعے اس مالی سال میں راولپنڈی ڈویژن میں 180 آبی تالابوں کی تعمیر مکمل کی جائے گی جن میں سے اب تک 44 آبی تالاب کی تعمیر مکمل کی جا چکی ہے۔ ان آبی تالابوں کی تعمیر پر حکومت کی طرف سے 50 فیصد سبسڈی فراہم کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ اس مالی سال میں راولپنڈی ڈویژن میں 1645 ایکڑ رقبے کو سیراب کرنے کیلئے جدید ڈرپ اور سپرنکلر نظام ِ آبپاشی کی تنصیب 60 فیصد سبسڈی پر کی جارہی ہے اور اس کے ساتھ ڈرپ نظام آبپاشی کو چلانے کے لئے 50 فیصد سبسڈی پر سولر نظام بھی نصب کر کے دیا جا رہا ہے جس سے اس مالی سال میں 1900 ایکڑ رقبے کو سیراب کرنے کیلئے بجلی سولر سسٹم سے پیدا کی جائے گی۔ مزید بتایا گیا کہ امسال کاشکارو ں کو 50 فیصد سبسڈی پر 110 واٹر ٹینک تعمیر کر کے دیئے گئے جس سے وہ اپنے زرعی رقبے کو کاشت کر کے مستفید ہوں گے۔ اس کے علاوہ سبسڈی پر 4545 ایکڑ رقبے کو ہموار کیا گیا۔ وزیر زراعت پنجاب کو بتایا گیا کہ قبل ازیں خطہ پوٹھوار میں 1800 منی ڈیمز سبسڈی پر تعمیر کیے گئے جن سے قریباً 45 ہزار ایکڑ رقبہ کو سیراب کیا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ قریباً 1870 سے زائد تالاب بنائے گئے جن سے قریباً 20 ہزار ایکڑ سے زائد رقبہ کو سیراب کیا جا رہا ہے۔ 1 لاکھ 18 ہزار ایکڑ رقبہ کو جدید ڈرپ و سپرنکلر نظام آبپاشی سے سیراب کرنے کے قابل بنایا گیا اور سبسڈی پر 5300 ایکڑ ڈرپ نظام آبپاشی کے لئے سولر نظام کی تنصیب کی گئی۔

حسین جہانیاں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -