خاتون سے ’فحش‘ انٹرویو لینے کے الزام میں یوٹیوبر کو جیل میں ڈال دیا گیا

خاتون سے ’فحش‘ انٹرویو لینے کے الزام میں یوٹیوبر کو جیل میں ڈال دیا گیا
خاتون سے ’فحش‘ انٹرویو لینے کے الزام میں یوٹیوبر کو جیل میں ڈال دیا گیا
سورس:   Youtube/Chennai Talks

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں ایک لڑکی سے فحش انٹرویو لینے کے الزام میں تین یوٹیوبرز کو گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا گیا۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق ان یوٹیوبرز کا تعلق تامل ناڈو سے تھا جنہوں نے ’چنئی ٹاکس‘ (Chennai Talks)کے نام سے یوٹیوب چینل بنا رکھا تھا۔ انہوں نے گزشتہ دنوں ایک ویڈیو پوسٹ کی جس میں وہ نوعمر لڑکی کے ساتھ جنسی تعلق، جنسیت، خودلذتی، شراب وسگریٹ نوشی اور دیگر ایسے فحش موضوعات پر گفتگوکررہے ہوتے ہیں۔ 

اس چینل پر 200سے زائد ویڈیوز پوسٹ کی گئی تھیں جن میں سے اکثر میں اسی نوعیت کی فحش گفتگو کی گئی تھی۔ گرفتار کیے گئے یوٹیوبرز31سالہ دنیش، 23سالہ اسین بادشاہ اور 24سالہ اجے بابو ہیں۔ یہ چینل دنیش نے 2019ءمیں بنایا تھا۔ پولیس نے تینوں کو گرفتار کرکے ان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ ملزمان نے دوران تفتیش بتایا کہ وہ ’ویوز‘ لینے کے لیے جان بوجھ کر ایسے فحش موضوعات پر ویڈیوز بناتے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اس چینل کے ذریعے ماہانہ 1لاکھ روپے کما رہے تھے۔

اس وائرل ویڈیو میں فحش گفتگوکرنے والی لڑکی نے بھی ان تینوں کے خلاف رپورٹ درج کروا دی ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ ”یہ ویڈیو سکرپٹڈ تھی اور ان لوگوں نے مجھے اس طرح کی گفتگو کرنے کے عوض 1500روپے دئیے تھے۔ اس کے بعد انہوں نے ویڈیو کو ایڈٹ کرکے میری گفتگو کے کچھ حصے کاٹ کر اسے مزید فحش بناڈالا۔ “

مزید :

بین الاقوامی -