پلازہ فروخت کرنے کی درخواست پر فیصلہ 15 جنوری تک مؤخر 

پلازہ فروخت کرنے کی درخواست پر فیصلہ 15 جنوری تک مؤخر 

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت کے دوران فواد حسن فواد کا پلازہ فروخت کرنے کی درخواست پر فیصلہ 15 جنوری تک موخر کردیا،احتساب عدالت نمبر 6 کے جج عزیز اللہ کلو نے کیس کی سماعت کی،نیب کے پراسیکیوٹر کے ساتھ نیب تفتیشی افسر عثمان سمیت دیگر2 نیب افسروں کے عدالت میں پیش ہوئے،دوران سماعت عدالت نے غیرمتعلقہ افسران کا پیش ہونے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ نیب افسران کا گروپ عدالت میں کیوں آیا؟ آج فواد حسن فواد کے پلازہ فروخت کی درخواست پر فیصلہ ہے، کیا آپ عدالت پر دباؤ ڈالنے آئے ہیں، نیب افسران عدالت پر اثرانداز ہونے آئے ہیں، نیب کے افسروں نے کہا کہ سر ویسے ہی آئے ہیں، فاضل جج نے استفسار کیامیری عدالت میں کیوں آئے ہیں؟ جس پر نیب افسروں نے کہاسر! ہم چلے جاتے ہیں، نیب پراسیکیوٹر نے افسران کی جانب سے معذرت طلب کی گئی جس پر عدالت نے کہا یہ سب قبول نہیں، ، عدالت نے کیس پر مزید کارروائی ملتوی کردی۔

،فواد حسن فواد نے اپنا پلازہ فروخت کرنے کی اجازت کیلئے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیارکیا ہے کہ میرے پلازہ کی قیمت 14 ارب روپے سے زائد ہے، عدالت سے استدعاہے کہ قرض اتارنے کیلئے پلازے کی فروخت کی اجازت دی جائے۔

مزید :

علاقائی -