پاکستان فلم انڈسٹری ترقی کی جانب گامزن ہے، فنکار

پاکستان فلم انڈسٹری ترقی کی جانب گامزن ہے، فنکار

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ فلم کراچی یا لاہور کی نہیں ہوتی وہ صرف اور صرف پاکستان کی ہوتی ہے۔ فلم کو لاہور اور کراچی میں تقسیم کرنے سے تعصب کو ہوا ملتی ہے جو لوگ اس طرح کی بات کرتے ہیں ان کو کسی بھی صورت میں محب وطن کہنا مناسب نہیں ہے پاکستان فلم انڈسٹری اس وقت ایک بار پھر ترقی کی جانب گامزن ہے۔ ہر فلم بین کی خواہش ہے کہپاکستان میں ایک بار پھر ماضی کی طرح اعلیٰ اور معیاری فلمیں بنیں۔شوبز شخصیات کا کہنا ہے کہ گزشتہ برسوں میں فلموں کو کامیابی ملی اس سے فلم میکرز کا حوصلہ بلند ہوا تھا اور زیادہ سے زیادہ فلمیں بننا شروع ہوئیں تھیں۔ خرم شیراز ریاض،شاہد حمید،معمر رانا،مسعود بٹ،حسن عسکری،شانسید نور،میلوڈی کوئین آف ایشیاء پرائڈ آف پرفارمنس شاہدہ منی،صائمہ نور،میگھا،ماہ نور،انیس حیدر،ہانی بلوچ،یار محمد شمسی صابری،سہراب افگن،ظفر اقبال نیویارکر،عذرا آفتاب،حنا ملک،انعام خان،فانی جان،عینی طاہرہ،عائشہ جاوید،میاں راشد فرزند،سدرہ نور،نادیہ علی،شین،سائرہ نسیم،صبا ء کاظمی،سٹار میکر جرار رضوی،آغا حیدر،ڈائریکٹر ڈاکٹر اجمل ملک،کوریوگرافرراجو حسین،صومیہ خان،حمیرا چنا،اچھی خان،شبنم چوہدری،محمد سلیم بزمی،سفیان،سانولی شاہ،انوسنٹ اشفاق،شہباز حسین،فیاض علی خاں،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم، نجیبہ بی جی ندا یاسر،جویریہ عباسی،ثناء،فرزانہ تھیم،صاحبہ،جویریہ سعود اورماریہ واسطی نے کہا کہ حالات مسلسل بہتری کی جانب گامزن ہیں امید ہیں کہ رواں سال کے آخر میں فلمیں دوبارہ ریلیز ہونا شروع ہوجائیں گی۔

مزید :

کلچر -