تحفظ ناموس رسالت محاذ کا سزائے موت قانون ختم کرنے کیخلاف یوم احتجاج

تحفظ ناموس رسالت محاذ کا سزائے موت قانون ختم کرنے کیخلاف یوم احتجاج

  

لاہور(نمائندہ خصوصی( تحفظ نامو س رسالت محاذ کی اپیل پر سزائے موت کے قانون کو ختم کرنے کے خلاف یوم احتجاج منایا گیا اس سلسلہ میں صدر تحفظ ناموس رسالت علامہ رضائے مصطفی نقشبندی نے جامعہ رسولیہ شیرازیہ میں خطبہ جمعہ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سزائے موت کو ختم کرکے موجودہ حکومت توہین رسالت قانون295Cکو ختم کرناچاہتی ہے جس کو کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ سزائے موت کوختم کرنے کامنصوبہ امریکی اور برطانیہ منصوبہ ہے جس کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا جامعہ نعیمیہ میں مولانا راغب حسین نعیمی نے خطبہ جمعہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ناموس رسالت کے تحفظ کے لےے خون کے آخری قطرے تک جنگ لڑی جائے گی اس لےے اگر سزائے موت کو ختم کرنے کامنصوبہ حکومت فوری طور پر ختم کرے کیونکہ سزائے موت کو ختم کرنے سے گستاخان رسول اور دہشت گردوں میں اضافہ ہوگا علامہ پیر محمداطہر القادری نے جامع مسجد محافظ ٹاﺅن میں خطاب کرتے ہوئے کہا حکومت سزائے موت ختم کرکے قاتلوں چوروں اور ڈاکوﺅں کو تحفظ فراہم کرناچاہتی ہے جس کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی ۔مولانا محمد علی نقشبندی نے جامع مسجد سہیل ٹاور انارکلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سزائے موت کے خلاف قانون سازی کی گئی تو سٹرکوں میں دمہ دم مست قلندر ہوگا خواجہ غلام قطب الدین فریدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دین اسلام کی حدود کو ختم کر کے حکمران امریکی غلامی کا ثبوت دے رہے ہیں باقی مقررین میں حاجی محمد ندیم ،مفتی کریم خان ،پروفیسر عقیل احمد ،مفتی محمد حسیب قادری اور دیگر شامل ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -