میرے خلاف مقدمہ چلانے کا اعلان سیاسی سٹنٹ وقت اور پیسے کا ضیاع ہے ،اوبامہ

میرے خلاف مقدمہ چلانے کا اعلان سیاسی سٹنٹ وقت اور پیسے کا ضیاع ہے ،اوبامہ ...

  

                              واشنگٹن (اظہرزمان ، بیوروچیف ) روزنامہ ”پاکستان“ نے چند روز قبل وائٹ ہاﺅس اور سپیکر کے درمیان محاذ آرائی کی Exclusive رپورٹ شائع کی تھی جس میں صدر اوباما نے جوکچھ کہا تھا اب ہفتے کے روز اپنے ہفتہ وار خطاب میں انہوں نے اپنا وہی تبصرہ دہرا کر اس موضوع میں مزید گرما گرمی پیدا کردی ہے۔ انہوں نے ایک مرتبہ پھر ایوان نمائندگان کے ری پبلکن ارکان کی طرف سے ان کے انتظامی اختیارات کی حدود سے تجاوز کرنے کے اقدامات کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے اعلان پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ صدر اوباما نے سابقہ تبصرہ دہراتے ہوئے اسے ”سیاسی سٹنٹ “ اور وقت اور پیسے کا ضیاع قرار دیا ہے۔ صدر اوباما نے امریکی عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سپیکر اور ری پبلکن ارکان ان کے محنت سے کمائے ہوئے ڈالر کو اس فالتو کام پر خرچ کرنا چاہتے ہیں۔ اس نئی محاذ آرائی کا ایک سبب یہ ہے کہ آئندہ نومبر میں امریکہ میں وسط مدتی انتخابات ہونے جارہے ہیں اور روایت کے مطابق ری پبلکن پارٹی اور ڈیموکریٹک پارٹی کو انتخابی مہم کے دورانئے میں ایک دوسرے کے خلاف استعمال کرنے کے لئے کچھ نہ کچھ مواد درکار ہوتا ہے۔ وائٹ ہاﺅس اور سپیکر کی محاذ آرائی نے انہیں یہ سامان فراہم کردیا ہے۔ ری پبلکن پارٹی بھی اس ٹکراﺅ کو ایک قدم آگے لے گئی ہے جمعہ کے روز ایوان نمائندگان کے ری پبلکن ارکان نے ایوان میں منظوری کے لئے ایک بل کا مسودہ پیش کیا ہے جس کا مقصد صدر اوباما کے امیگریشن یا میڈی کیئر سمیت مختلف معاملات پر کانگریس سے منظوری لئے بغیر انتظامی آرڈرجاری کرنے کے خلاف مقدمہ چلانے کے لئے سپیکر کو اختیارات دینا ہے۔ اس موقع پر سپیکر بوہنر نے کہا تھا کہ ”ایوان کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ مقننہ اور آئین کی پاسداری کرے اور ہم بالکل یہی کام کررہے ہیں“۔ وائٹ ہاﺅس کا کہنا یہ ہے کہ رواں سال میں کم ازکم 45ایسے مواقع آئے جب انتظامیہ نے کانگریس سے رجوع کیا لیکن کانگریس نے ان تمام معاملات کو التواءمیں ڈال دیا۔ اپنے ہفتہ وار خطاب میں صدراوباما نے کانگریس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ”کانگریس ، کچھ کرو۔ امریکیوں کی مدد کے لئے کچھ کرو۔ باقی ماندہ ملک کے ساتھ شامل ہوجاﺅ۔ میرے ساتھ شامل ہوجاﺅ۔ میں آپ کے ساتھ مل کر کام کرنے کا منتظر ہوں۔

مزید :

علاقائی -