عمران ، قادری سے مذاکرات کیے جائیں ،لانگ مارچ سے حکومتیں چلی جاتی ہیں : گیلانی

عمران ، قادری سے مذاکرات کیے جائیں ،لانگ مارچ سے حکومتیں چلی جاتی ہیں : ...

  

اسلام آباد (آن لائن) سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ سابق صدر پرویز مشر ف سے متعلق جو کہنا تھا وہ کہہ دیا ‘ اپنے بیان پر قائم ہوں،میں فرحت اﷲ بابر کے بیان کی وضاحت ضروری نہیں سمجھتا۔ کشمیر ہاﺅس میں وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید کے دیئے گئے افطار ڈنر کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کشمیر اور فلسطین پر ہونے والے مظالم کی بھرپور مذمت کرتے ہیں ہم نے مشرف کو قومی مفاہمت کے تحت اس ملک سے بھاگنے پر مجبور کیا ۔ پارلیمنٹ کی نسبت دیگر ادارے مضبوط ہوئے ہیں ، یہ لولی لنگڑی ہورہی ہے پاکستان میں جمہوریت مستحکم نظر نہیں آرہی۔ انہوں نے کہاکہ 67 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ پیپلزپارٹی نے اپنی حکومت پوری کی یہ بے نظیر بھٹو شہید کے خون اور آصف علی زرداری کی سیاسی مفاہمت کے تحت ممکن ہوا، موجودہ حکومت کو اپنی حکومت بچانے کیلئے قومی مفاہمت کو فروغ دینا چاہے اور جماعت کے سربراہ کو عمران خان اور طاہر القادری سے مذاکرات کرنے چاہیں، ورنہ لانگ مارچ سے حکومتیں چلی جاتی ہیں، صدر زرداری کے دیئے ہوئے درس کو اپنے لئے مشعل راہ سمجھیں ہم نے حکومت بچانے کیلئے اسٹیبلشمنٹ اور عدلیہ سے مذاکرات کئے ،قومی مفاہمت کو فروغ اور ڈائیلاگ کے سلسلے میں کسی جماعت کے ساتھ تفریق نہ برتی جائے، آج حکومت مساویانہ بنیادوں پر ممبران پارلیمنٹ کو فنڈز نہیں کررہی آج اپوزیشن تو ایک طرف حکومت کے ممبران اسمبلی بھی فنڈز سے مستفید نہیں ہورہے یہ پیسہ عوام کا ہے اور عوام پر ہی خرچ ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ملکی افواج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں آئی ڈی پیز کی بحالی کیلئے کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے پاس ٹائم کم ہے وہ آئی ڈی پیز کی بحالی اور دیگر سیاسی جماعتوں کے ساتھ مذاکرات کے حوالے سے تمام امور کو حتمی شکل دیں۔

مزید :

صفحہ اول -