سائنسدانوں کا ڈینگی کی ویکسین ایجاد کرنے کا دعویٰ

سائنسدانوں کا ڈینگی کی ویکسین ایجاد کرنے کا دعویٰ

  

لندن (نیوز ڈیسک) پانچ ایشیائی ممالک سے تعلق رکھنے والے سائنسدانوں نے ڈینگی کی ویکسین ایجاد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ ”لانٹ جرنل“ میں شائع ہونے والی تحقیق میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ جن بچوں کو تحقیق کے دوران ویکسین دی گئی ان میں سے 56 فیصد اس بیماری کے خطرے سے محفوظ ہیں۔ تحقیق کاروں نے مختلف ایشیائی ممالک سے تعلق رکھنے والے 2 سے 14 سال کے 6 ہزار سے زائد بچوں پر تحقیق کی۔ دو سال بعد دیکھا گیا کہ 56 فیصد بچے اس وائرس سے محفوظ تھے۔ کہا گیا ہے کہ یہ ویکسین ان بچوں میں بے حد موثر تھی جو کہ پہلے بھی ڈینگی کا نشانہ بن چکے ہیں۔ تحقیق میں حصہ لینے والی ڈاکٹر ماریا روزاریو نے میڈیا کو بتایا کہ پہلی مرتبہ سائنس اتنی موثر ویکسین تیار کرنے میں کامیاب ہوئی ہے۔ گوکہ اس کے زریعے 56 فیصد تک بہتری دیکھی گئی ہے لیکن یہ ان ممالک کے لئے بہت اہم ہے جہاں یہ مرض عام ہے۔ دوسری جانب غیر جانبدار ماہرین کا کہنا ہے کہ اس ویکسین میں مزید بہتری کی گنجائش ہے اور اس کے بچوں پر اثرات کا 5 برس تک جائزہ لیا جانا چاہیے۔ یاد رہے کہ ہر سال 10 لاکھ سے زائد لوگ ڈینگی سے متاثر ہوتے ہیں اور اس سے بچنے کا تاحال کوئی طریقہ سائنس کے پاس موجود نہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -