ایشین گیمز میں پاکستانی دستے کی شرکت مشکوک ہوگئی

ایشین گیمز میں پاکستانی دستے کی شرکت مشکوک ہوگئی

اسلام آباد (آئی این پی)نگران وفاقی حکومت کی جانب سے آئندہ ماہ انڈونیشیا میں کھیلی جانیوالی 18ویں ایشین گیمز میں پاکستانی دستے کی شرکت کیلئے 12کروڑ گرانٹ کی منظوری کے حوالے سے کوئی فیصلہ نہ کیا جا سکا جس کے باعث ایشین گیمز میں شرکت کے حوالے سے خدشات پیدا ہونے لگے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق 18اگست سے 2ستمبر تک انڈونیشیا میں منعقد ہونیوالے ایشین گیمز میں پاکستان کے تین سو سے زائد دستے نے شرکت کرنی ہے ،پاکستانی دستے کی گیمز میں شرکت کیلئے پی ایس بی نے حکومت سے 12کروڑ کی گرانٹ کی منظوری مانگی تھی جس پر تاحال کوئی جواب نہیں دیا گیا جبکہ پاکستانی دستے کے رہائشی چارجز اور ڈمیج چارجز کے حوالے سے ایشین گیمز کی آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے پاکستان اولمپک ایسو سی ایشن کو دی جانیوالی ڈیڈ لائن ختم ہونے کے حوالے سے بھی چند روز باقی رہ گئے ہیں جن کی مد میں پی او اے نے ایشین گیمز کی آرگنائزنگ کمیٹی کو 2لاکھ 70ہزار ڈالرز رہائش اور 30ہزار امریکی ڈالرز ڈمیج چارجز کی مد میں ادا کرنے ہیں ۔ دوسری جانب رابطہ کرنے پر پاکستان سپورٹس بورڈ کے ترجمان اعظم ڈار کا کہنا تھا کہ ایشین گیمز میں شرکت کرنے والے قومی دستے پر اٹھنے والے اخراجات کی منظوری کی سمری سپورٹس بورڈ نے بھجوا رکھی ہے اور جیسے ہی اس سمری کی منظوری دی جاتی ہے پاکستان اولمپک ایسو سی ایشن کو فوری طور پر ادائیگی کر دی جائے گی تاکہ ایشین گیمز کے حوالے سے پاکستان کو کسی شرمندگی کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی