حامد موسوی کی الیکشن پالیسی مسائل کابہترین حل ہے،علامہ تصور

حامد موسوی کی الیکشن پالیسی مسائل کابہترین حل ہے،علامہ تصور

راولپنڈی (جنرل رپورٹر) تنظیم شیعہ آئمہ مساجد پاکستان نے قائد ملتِ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے اعلان کردہ29شوال تایکم ذیقعدکو ایام عظمت انساں منانے کاخیرمقدم کیاہے جمعہ کو مرکزی جامع مساجد میں علمائے کرام،خطباء اور واعظین نے اپنے خطبات میں نگہبان رسالت حضرت ابوطالب ؑ اورحضرت فاطمہ معصومہ قمؑ کی تعلیمات اور سیرت و کردارکو دنیائے انسانیت کیلئے بہترین نمونہ عمل قراردیا۔ الکاظم میں تنظیم کے چیئرمین علامہ سیدتصورحسین نقوی نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے بنوں، کوئٹہ مستونگ اورپشاورمیں خودکش بم دھماکوں کی مذمت کرتے ہوئے ان مذموم کاروائیوں کو کالعدم گروپوں دی گئی ڈھیل کانتیجہ قراردیا۔انہوں نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ کالعدم تنظیموں اور قانون کو مطلوب دہشت گردوں کے الیکشن میں حصہ لینے پر فوری پابندی عائد کرے جو طے شدہ منصوبے کے تحت فرقہ وارانہ عصبیتوں کو ہوا دینے کیلئے انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔ انہوں نے اس امر پر گہری تشویش کا اظہارکیا کہ چھ درجن سے زائد انتہاپسند دہشتگرد تنظیموں پر پابندی کے باوجودانکی الیکشن کمیشن میں رجسٹریشن اور کالعدم ناموں سے انتخابات میں انکی شمولیت سے پرامن اور شفاف الیکشن کا انعقاد خطرے میں پڑ گیا ہے۔ انہوں نے نگران حکومت پر زور دیا کہ وہ عدل و انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے اپنے فرائض اانجام دہی کیلئے کالعدم گروپوں کی الیکشن کمیشن سے رجسٹریشن اور انہیں الاٹ کیے گئے انتخابی نشانات فوری طور پر منسوخ کروائے اور دہشتگردی پر قابو پانے کیلئے ٹھوس عملی اقدامات کرے۔علامہ سیدتصورحسین نقوی نے قائدملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کی الیکشن پالیسی کوسراہتے ہوئے اس قوم وملک کے مسائل کابہترین حل قراردیتے ہوئے واضح کیاکہ چارٹر آف ڈیمانڈ کے بارے میں تحریری یقین دہانی کرانے والی جماعتوں کی قومی و صوبائی سطح پر حمایت کا فیصلہ کیا جائیگا۔انہوں نے یہ بات زوردیکر کہی کہ پاکستان دو قومی نظریے کے تحت وجود میں آیا تھا کیونکہ جس طرح کفر ملت واحدہ ہے اسی طرح اسلام بھی ملتِ واحدہ ہے یہی نظریہ اساسی ہے جبکہ اسلام ہر قسم کی فرقہ واریت اورعصبیت کو کنڈم کرتا ہے ۔ جامع مسجدجعفریہ میں علامہ صادقی نے جمعہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے باور کرایا کہ اگر دہشت گرد نگران حکومت اور الیکشن کمیشن کی ڈھیل کی وجہ سے اسمبلیوں تک پہنچ گئے توپھر وطن عزیز اور نظریہ اساسی محفوظ نہیں رہے گا ۔انہوں اس عزم کا اظہار کیا کہ مکتب تشیع کے پیروکار آمدہ انتخابات میں قائد ملت جعفریہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی کے لائحہ عمل اور الیکشن پالیسی پر لبیک کہیں گے ۔انہوں نے سیاسی جماعتوں پر زور دیا کہ وہ کالعدم گروپوں کے ساتھ سیاسی اتحاد ختم کریں اور حکومت ممنوعہ گروپوں کو آہنی شکنجے میں جکڑے ۔جامعہ مسجد قصر ابو طالبؑ ،جامع مسجد جعفریہ اسلام آباد،جامع مسجد قصر خدیجۃ الکبریٰ ترلائی کلاں ،جامع مسجد اہلبیت واہ کینٹ ،جامع مسجد قصر امام موسی کاظم میں علامہ محسن علی ہمدانی،علامہ بشارت حسین امامی،علامہ سید حسین مقدسی ،علامہ صادقی نے خطبات جمعہ میں دہشت گردی کے واقعات کی پرزور مذمت کی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر