پیپلز پارٹی ہتھکنڈوں سے ڈرنے والی نہیں ، رحمن ملک

پیپلز پارٹی ہتھکنڈوں سے ڈرنے والی نہیں ، رحمن ملک

اسلام آباد(آ ئی این پی) پیپلز پارٹی کے سینیٹر رحمن ملک نے کہا ہے کہ آصف زرداری کا نام بغیر کسی تحقیق اور الزام کے ای سی ایل میں ڈالا گیا جس پر نگران وزیر داخلہ وضاحت دیں اور معافی مانگیں، ملک کی بڑی یونیورسٹیوں میں لوٹا کریسی پر تحقیق ہونی چاہیے تاکہ لوٹاکریسی کو فروغ دینے والوں کی نشاندہی ہو اور اس کو روکا جا سکے،فاقی اور نگران صوبائی حکومتوں کے درمیان ہم آہنگی کے فقدان کے باعث دعشتگردی کے واقعات پیش آرہے ہیں،نواز شریف نے اگر سیاست کرنی ہے تو اپنے خلاف عدالتی فیصلے کو عدالتوں سے معطل کرانا ہوگا۔وہ جمعہ کو پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ2018کے الیکشن کو گالیوں کا الیکشن بنا دیا گیا ہے۔ عمران خان کی جانب سے سیاسی جماعت کے کارکنوں کو گدھا کہنے کی مذمت کرتے ہیں۔عمران خان آج جو زبان استعمال کر رہے ہیں کل ان کے خلاف بھی استعمال ہو سکتی ہے۔پشاور اور بنوں میں حملے ہوئے حالانکہ اکرم درانی پر حملوں کی اطلاع پہلے سے موجود تھی پھر بھی ان کی سیکیورٹی کیلئے اقدامات نہیں کیے گئے۔میری گزارش ہے کہ ملک کی بڑی یونیورسٹیوں میں لوٹا کریسی پر تحقیق ہونی چاہیے اور جو طالبعلم اس پر تحقیق کریں گے تاکہ ملک کے اندر سے لوٹاکریسی کو فروغ دینے والوں کی نشاندہی ہو اور اس کو روکا جا سکے۔پیپلز پارٹی ایسے ہتھکنڈوں سے ڈرنے والی نہیں ہے۔ ن لیگ کے لندن والے گھر کے باہر ایک سیاسی جماعت کے کارکن جو کر رہے ہیں اس سے پاکستان کی بدنامی ہو رہی ہے۔گھروں کی عزتوں کو پامال کرنا سیاستدانوں کو زیب نہیں دیتا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر