اقلیتی برادری کے درپیش مسائل کے حل کو ترجیح دی جائیگی : ڈاکٹر سارہ صفدر

اقلیتی برادری کے درپیش مسائل کے حل کو ترجیح دی جائیگی : ڈاکٹر سارہ صفدر

پشاور( سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کی نگران وزیر برائے تعلیم، سماجی بہبود، مذہبی و اقلیتی امور پروفیسر ڈاکٹر سارہ صفدر نے کہا ہے کہ اقلیتی آبادی کے مسائل کو ہر ممکن طور پر حل کیا جائے گا، محکمہ مذ ہبی واقلیتی امور تمام اقلیتی مذاہب کی عبادت گاہوں قبرستانوں اور شمشان گھاٹ کی ضروریات کو ان اقلیتی برادریوں کی مشاورت سے جلد پورا کرے۔وہ پشاور میں اپنے دفتر میں اقلیتی برادری کے نمائندہ وفد سے ملاقات کررہی تھیں اس موقع پر سیکرٹری مذہبی و اقلیتی امور ہدایت جان بھی موجود تھے۔ نگران صوبائی وزیر پروفیسر ڈاکٹر سارہ صفدر کا کہنا تھا کہ صوبے میں آباد اقلیتی برادری کو انکی مذہبی رسومات و عبادات کی ادائیگی میں درپیش مسائل کا ازالہ محکمہ مذہبی و اقلیتی امور اور اوقاف کی ذمہ داری ہے۔ حکومت تمام شہریوں کو بلا تفریق سہولیات کی فراہمی پر یقین رکھتی ہے۔ انکا کہنا تھا کہ نگران صوبائی کابینہ نے اقلیتی آبادی کے لیے ملازمتوں میں پانچ فیصد کوٹہ مختص کرنے کا احسن فیصلہ کیا ہے۔انکا کہنا تھا کہ اقلیتوں کے لیے مختص فنڈزکو انہی کی بہتری کے لیے استعمال میں لایا جانا چاہیئے۔نگران صوبائی وزیر نے محکمہ مذہبی و اقلیتی امور کو ہدایت کی کہ صوبے میں جہاں گرجا گھر، مندر، گوردوارے اور دیگر عبادت گاہوں کی حالت زار کی بہتری کے لیے کام ہو رہا ہے اسکی نگرانی کی جائے تاکہ فنڈز کا صحیح طور پر استعمال ہو۔انکا کہنا تھا کہ بشمول مسلم قبرستانوں کے تمام قبرستانوں میں غیر قانونی تعمیرات کی قطعی اجازت نہیں ہونی چاہیئے۔ انکا کہنا تھا کہ تمام مذاہب کی عبادتگاہیں قابل احترام ہیں اور انکے تقدس کا خیال رکھنا چاہیئے ۔ نگران صوبائی وزیرپروفیسر ڈاکٹر سارہ صفدر نے ملاقات کے لیے آئے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ انکے مسائل کو دور کرنے کے لیے سنجیدہ اقدامات اٹھائے جائینگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...