ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے لگتاہے کہ شہبازشریف کو وزیراعلیٰ بھی بننے نہیں دی جائے گا : سہیل وڑائچ

ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے لگتاہے کہ شہبازشریف کو وزیراعلیٰ بھی بننے نہیں ...
ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے لگتاہے کہ شہبازشریف کو وزیراعلیٰ بھی بننے نہیں دی جائے گا : سہیل وڑائچ

کراچی (ڈیلی پاکستان آ ن لائن )سینئر صحافی و تجزیہ کار سہیل وڑائچ نے کہاہے کہ ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے نہیں لگتا کہ شہبازشریف کو اب وزیراعلیٰ پنجاب بننے دیا جائے گا ۔

تفصیلات کے مطابق سہیل وڑائچ نے کہاہے کہ ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے نہیں لگتا کہ شہباز شریف کو اب وزیراعلیٰ پنجاب بننے دیا جائے گا، نگراں حکومت نے ن لیگ کی ریلی روکنے کیلئے بہت غلط حکمت عملی اختیار کی، ن لیگ کا نواز شریف کے استقبال کیلئے ریلی کی صورت جانے کا فیصلہ سیاسی فائدہ حاصل کرنے کیلئے تھا، جب ریاست کیخلاف مزاحمتی سیاست کی جائے تو بڑا ہجوم اکٹھا نہیں کیا جاسکتا ہے، لاہور میں کنٹینر ز اور رکاوٹوں کی وجہ سے توقع کے برخلاف زیادہ لوگ اکٹھے نہیں ہوئے، ن لیگ پارٹی کے اندر دو متضاد بیانیوں کو ایک کرنے میں کامیاب ہوگئی ہے، نواز شریف اور مریم نواز جیل میں ہوں گے اور شہباز شریف اپنا بیانیہ تلخ کریں گے تو ن لیگ میں گروپنگ کا تاثر ختم ہوجائے گا، جاننے والے جانتے تھے کہ دونوں بھائی مشورہ کر کے ایسا کرتے ہیں۔ سہیل وڑائچ کا کہنا تھا کہ ن لیگ کو الیکشن میں جو نقصان ہونا تھا ہوچکا ہے، جمعے کی ریلی سے ن لیگ کا ووٹر رک جائے گا لیکن فتح کے امکانات پہلے ہی ختم ہوچکے ہیں، وفاقی حکومت کو ایک طرف کردیں اب انہیں پنجاب حکومت کیلئے اکثریت حاصل کرنی ہے، ریاستی پالیسی کو دیکھتے ہوئے نہیں لگتا کہ شہباز شریف کو اب وزیراعلیٰ پنجاب بننے دیا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...