وطن سے عشق سراج رئیسائی کی پہچان بنا رہا ، بھارتی ترنگے کو روندا، قومی پرچم کیساتھ تصاویر دوستوں کو بھی بھیجتے رہے

وطن سے عشق سراج رئیسائی کی پہچان بنا رہا ، بھارتی ترنگے کو روندا، قومی پرچم ...
وطن سے عشق سراج رئیسائی کی پہچان بنا رہا ، بھارتی ترنگے کو روندا، قومی پرچم کیساتھ تصاویر دوستوں کو بھی بھیجتے رہے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کوئٹہ (ویب ڈیسک) مستونگ خو د کش حملے میں شہید بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنما نوابزدہ سراج رئیسائی بلوچستان کے انتہائی نامساعد حالات میں بھی بہت دلیری اور ثابت قدمی سے وطن کیساتھ محبت کا اظہا رکرتے رہے ، قومی پرچم کے ساتھ تصاویر ان کی پہچان تھیں جس پر وہ فخر محسوس کرتے اور ان تصاویر کو خوشی کے ساتھ دوستوں کو بھیجتے..

نوابزادہ سراج رئیسائی 4اپریل 1963کو ضلع بولان کے علاقے مہر گڑھ میں پیدا ہوئے اور ان کا تعلق بلوچستان کے رئیسائی قبیلے سے تھا۔ ابتدائی تعلیم بولان سے حاصل کی اور بعد ازاں زرعی یونیورسٹی ٹنڈوم جام سے ایگرنومی میں بی ایس سی کیا ، جس کے بعد نیدر لینڈز سے فلوری کلچر کا کورس کیا۔ ان کے والد مرحوم نواب غوث بخش رئیسائی سابق گورنر بلوچستان اور سابق وفاقی وزیر خوراک و زراعت بھی رہے۔

انہوں نے 1970 میں بلوچستان متحدہ محاذ کی بنیاد رکھی۔ سراج رئیسائی سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب اسلم رئیسائی اور سابق سینیٹر نوابزادہ لشکری رئیسائی کے چھوٹے بھائی تھے۔ انہوں نے رواں سال تین جون کوا پنی جماعت کو صوبہ میں بننے والی نئی سیاسی جماعت بلوچستان عوامی پارٹی میں ضم کرنے کا اعلان کیا اور بی اے پی کے ٹکٹ پر صوبائی اسمبلی کی نشست حلقہ پی بی 35 مستونگ سے الیکشن لڑ رہے تھے۔ اسی حلقے میں ان کے بھائی اسلم رئیسائی بھی امیدوار تھے اس سے قبل مستونگ میں جولائی 2011ء میں ایک بم دھماکے میں نوابزادہ سراج رئیسائی کا بیٹا اکمل رئیسائی شہید ہوگیا تھا مگر انکے قدم نہ گمگائے۔

مزید : علاقائی /بلوچستان /کوئٹہ /قومی