حنیف عباسی نے ایفی ڈرین کیس کا 5 دن میں فیصلہ سنانے کا عدالتی حکم سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا

حنیف عباسی نے ایفی ڈرین کیس کا 5 دن میں فیصلہ سنانے کا عدالتی حکم سپریم کورٹ ...
حنیف عباسی نے ایفی ڈرین کیس کا 5 دن میں فیصلہ سنانے کا عدالتی حکم سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما حنیف عباسی نے لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے ایفی ڈرین کوٹہ کیس کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔

حنیف عباسی کی جانب سے سپریم کورٹ میں دائر اپیل میں موقف اپنایا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے غیر متعلقہ فریق کی درخواست پرحکم دیا، عدالت عالیہ نے درخواستگزار شاہد اورکزئی کے آرٹیکل 203 درخواست دینے پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ ہنگامی نوعیت نہ ہونے کے باعث بھی لاہور ہائیکورٹ نے کیس کو چھٹیوں میں سنا، ٹرائل کورٹ نے کیس میں حتمی دلائل کیلئے اگست کی تاریخ دی، جس پر کسی فریق نے اعتراض نہیں کیا۔

حنیف عباسی کا کہنا ہے کہ ہائیکورٹ نے کیس 16 جولائی کو مقرر کر کے 5 روز میں فیصلہ کرنے کا حکم دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ 25 جولائی کو ہونے والے انتخابات میں بطور امیدوار حصہ لے رہے ہیں، لاہور ہائیکورٹ فیصلے سے ان کی انتخابی مہم متاثر ہو گی۔

لیگی رہنما نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ ان کی درخواست 16 جولائی کو سماعت کیلئے مقرر کی جائے اور لاہور ہائی ہائیکورٹ کے فیصلے پرحکم امتناعی جاری کیا جائے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد