’اگر بچہ پیدا کرنے کی خواہش ہے تو دن میں اس ٹائم پر کوشش کریں‘ سائنسدانوں نے شادی شدہ افراد کو سب سے قیمتی مشورہ دے دیا

’اگر بچہ پیدا کرنے کی خواہش ہے تو دن میں اس ٹائم پر کوشش کریں‘ سائنسدانوں نے ...
’اگر بچہ پیدا کرنے کی خواہش ہے تو دن میں اس ٹائم پر کوشش کریں‘ سائنسدانوں نے شادی شدہ افراد کو سب سے قیمتی مشورہ دے دیا

  

زیورخ(نیوز ڈیسک)حصول اولاد کے متمنی جوڑوں کو حمل ٹھہرنے میں مشکلات کے باعث بہت پریشانی اور مایوسی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اگرچہ اس مسئلے کے اسباب کئی طرح کے ہوسکتے ہیں لیکن سائنسدانوں نے ایک حالیہ تحقیق میں حیرت انگیز انکشاف کیا ہے کہ ازدواجی فرائض کی ادائیگی کے موزوں وقت کا انتخاب کر کے حمل ٹھہرنے کا امکان کئی گنا بڑھایا جا سکتا ہے۔

میل آئن لائن کے مطابق حال ہی میں کی گئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ حمل ٹھہرنے کیلئے بہترین لمحات موسم بہار میں صبح کے اوقات ہیں۔ خصوصاً مارچ ، اپریل اور مئی کے مہینوں میں صبح تقریباً ساڑھے سات بجے کے قریب ازدواجی فرائض کی ادائیگی کی جائے تو حمل ٹھہرنے کا امکان سب سے زیادہ ہوتا ہے۔

سوٹزر لینڈ میں کی گئی اس تحقیق کے مطابق سپرم کا سائز اور شکل بیضے کو فرٹیلائز کرنے کیلئے مارچ ، اپریل اور مئی کے مہینوں میں موزوں ترین ہوتے ہیں جبکہ سپرم کا اپنا اندرونی نظام الاوقات ہوتا ہے جس کے مطالعے سے معلوم ہوا ہے کہ صبح کے اوقات میں سپرم سب سے زیادہ متحرک اور توانا ہوتے ہیں۔ اس حساب سے دیکھا جائے تو مارچ ، اپریل اور مئی کے مہینوں میں صبح کے اوقات میں اور خصوصاً تقریباً ساڑھے سات بجے ازدواجی فرائض کی ادائیگی کی جائے تو حمل کے امکانات سب سے زیادہ ہوتے ہیں۔

یہ تحقیق یونیورسٹی ہسپتال زیورخ کے سائنسدانوں نے کی اور اس کے دوران 7ہزار سے زائد مردوں کے سپرم کی صحت کا مشاہدہ کیا گیا۔ ان مردوں کی عمریں 25سے 40سال کے درمیان تھیں اور تحقیق کے دوران ان کے سپرم کی تعداد ، ارتکاز ، حرکت کرنے کی صلاحیت اور حرکت میں معاونت فراہم کرنے والی موزوں ترین شکل کا مطالعہ کیا گیا تھا۔ یہ تحقیق سائنسی جریدے ’’ کرونو بائیولوجی انٹرنیشنل ‘‘ میں شائع کی گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس