جج کا بیان حلفی اپنے ہی کیخلاف چارج شیٹ،کوئی دباؤ تھاتو مانیٹرنگ جج کو بتانا چاہیے تھا:مسلم لیگ (ن)

جج کا بیان حلفی اپنے ہی کیخلاف چارج شیٹ،کوئی دباؤ تھاتو مانیٹرنگ جج کو بتانا ...

اسلام آباد،لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) مسلم لیگ (ن)نے کہا ہے کہ جج کے بیان حلفی میں ہی خود کیخلاف چارچ شیٹ ہے،جج پر کوئی دباؤ تھا تو مانیٹرنگ جج کو بتانا چاہیے تھا،ویڈیو نے بہت سے شکوک وشبہات پیدا کر دیئے ہیں اب ہر کیس مشکوک ہوگیا،حکومت اس جج کو خرید سکتی ہے تو کسی اور جج کو بھی خرید سکتی ہے،پہلے حکومتی وزراء ویڈیو کو غلط کہتے رہے،جج کو ہٹانے کے بعد اب حکومت ارشدملک کا دفاع کررہی ہے،حکومت کا ملوث ہونا کھل کر سامنے آگیا،نواز شریف غیرقانونی طور پرجیل میں ہیں،اعلی عدلیہ معاملے کو نوٹس لے، سپریم کورٹ سے کوئی نوٹس نہیں ملا،سپریم کورٹ نے بلایا تو ضرور جاؤں گا۔ ہفتہ کو مسلم لیگ (ن)کے رہنما سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی مریم اورنگزیب اور مصدق ملک کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نیب کورٹ کے ابتک کے معاملات عوام کے سامنے رکھنے ہیں،ایک ہفتہ ہوا ویڈیو عوام کے سامنے رکھ دیا۔ انہوں نے کہاکہ جج ارشد ملک نے خود بتادیا ہے کہ دباؤ کے تحت فیصلہ دیا۔انہوں نے کہاکہ اس معاملے کے بعد جو کیس نواز شریف پر تھا وہ ختم ہوگیا،نام نہاد انصاف کا معاملہ مشکوک ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم عدالتوں کا احترام کرتے ہیں تاہم ویڈیو نے بہت سے شکوک وشبہات پیدا کردئیے،اب ہر کیس مشکوک ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت اس جج کو خرید سکتی ہے تو وہ کسی اور جج کو بھی خرید سکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے ترجمان نے کہا کہ جج ارشد ملک کو ہٹا دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ جج کی پریس ریلیز اور بیان حلفی میں تضادات ہیں،جج کے بیان حلفی میں ہی خود کے خلاف چارچ شیٹ ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ 21گریڈ کا افسر ہے اس نے تین مرتبہ وزیراعظم کے کیس کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ شاید پاکستان کی قانونی تاریخ ہے اس کیس پر سپریم کورٹ نے مانیٹرنگ جج تعینات کیا گیا،جب جج پر دباؤ تھا تو انہوں نے کیوں شکایت نہیں کی۔ انہوں نے کہاکہ تھانے میں پرچہ کیوں درج نہیں کروایا۔ انہوں نے کہاکہ نواز شریف کے کیس سمیت ہرکیس مشکوک ہوگیا ہے،حکومت کا ملوث ہونا کھل کر سامنے آگیا،اعلی عدلیہ اس معاملے کو نوٹس لے۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں انصاف کے نظام کی ساکھ اور احترام ہے ان کو بحال کرنے کی ضرورت ہے،حکومت نے انصاف کے نظام پر گہرا وار کیا ہے۔سابق وزیر اعظم نے کہاکہ ہم سیاسی مقاصد حاصل نہیں کرنا چاہتے،بدقسمتی ہے کہ حکومت نے یوٹرن لیا ہے۔ایک سوا ل پر انہوں نے کہاکہ ارشد ملک کو مانیٹرنگ جج کو بتانا چاہیے تھا،جو لوگ اس میں ملوث ہیں ان کو سزا ملی چاہیے۔صحافی نے سوال کیا کہ کیا آپ حلف دینے کو تیار ہیں کہ جج نے ملاقاتیں نہیں کیں۔شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ ویڈیو عوام کے سامنے ہے،کسی کو حلف دینے کی ضرورت نہیں۔انہوں نے کہاکہ مجھے سپریم کورٹ سے کوئی نوٹس نہیں ملا،سپریم کورٹ نے بلایا تو ضرور جاؤں گا۔ انہوں نے کہاکہ چالیس منٹ کی ویڈیو میں ہر ثبوت موجود ہے۔ انہوں نے کہاکہ ناصر جنجوعہ کو میں نہیں جانتا۔مسلم لیگ(ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے عمران صاحب!سسلین مافیا آپ ہیں، جس نے دھمکا کر،سازش کرکے بے گناہ کو جیل بھجوایا،جس نے غریب عوام کے منہ سے روٹی اور روزگار چھین لیا، جس نے 22کروڑ عوام کو آئی ایم ایف کے آگے بیچ دیا۔مسلم لیگ (ن) کے نائب صدر مشاہد اللہ خان نے جج ارشد ملک کی نواز شریف سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا سابق وزیراعظم نہیں گئے تھے بلکہ جج خود ان کے پاس آئے تھے۔ایک انٹرویومیں انہوں نے کہاکہ عدالت نے طلب کیا تو جج ارشد ملک کی ملاقاتوں کی اصل ویڈیوز پیش کر دیں گے۔انہوں نے کہاکہ جج نے غلط کام کیا اس لئے عہدے سے ہٹایا گیا اب اخلاقی بنیادوں پر میاں نواز شریف کو بھی رہا ہونا چاہیے۔مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطا اللہ تارڑ نے کہا ہے کہ احتساب عدالت کے جج متنازعہ ہوچکے ہیں، اب فیصلے کی قانونی حیثیت نہیں۔ہمارا مطالبہ ہے نواز شریف کو فوری رہا کیا جائے اورکیس کا ری ٹرائل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ماڈل ٹاؤن میں ہمارے جنریٹرز کی تاریں کاٹی گئی، حکومت کے پاس سیاسی انتقامی کارروائیوں کے علاہ کچھ نہیں۔ پی ٹی آئی کی حکومت کے پاس ڈویلپمنٹ یا عوام کو ریلیف دینے کیلئے کچھ نہیں ہے۔ عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ میری ڈی سی لاہور سے بات ہوئی،ان سے درخواست کی ہے کہ آپ سیاسی بنیادوں پر کاروائیاں نہ کریں۔ماڈل ٹاؤن کا ایریا ایک کوآپریٹو سوسائٹی ہے، جہاں ڈی سی کے اختیارات فعال نہیں کرتے۔اگر کوئی تجاوزات تھی تو سات یا دس دن کا وقت ہوتا ہے لیکن ہمیں کوئی نوٹس کیوں نہیں دیا گیا۔ مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سینیٹر آصف کرمانی نے کہا ہے کہ نواز شریف کے دور میں عوام سکون سے دو وقت کی روٹی کھاتے تھے،آج ملک کا ہر طبقہ مہنگائی اور ٹیکسوں کے بوجھ سے سخت پریشان ہے۔ موجودہ حکومت کی اب تک کی کارکردگی کھایا پیا کچھ نہیں گلاس توڑا بارہ آنے ہے۔عوام اپنے گھروں کی چھتوں سے اذانیں دیں تاکہ ان ظالم حکمرانوں سے اللہ تعالی جلد نجات دلائے۔

 مسلم لیگ (ن) 

مزید : صفحہ اول