ملک انتشار کا متحمل ہو سکتا ہے نہ معاشی پالیسیوں پر سمجھوتہ ممکن،تاجر برادری نے ہڑتال رد کر کے حب الوطنی کا ثبوت دیا:وزراء

ملک انتشار کا متحمل ہو سکتا ہے نہ معاشی پالیسیوں پر سمجھوتہ ممکن،تاجر ...

لاہور،اسلام آباد(لیڈی رپورٹر،فلم رپورٹر،مانیٹرنگ ڈ یسک، نیو ز ا یجنسیا ں) تاجربرادری نے سیاسی جماعتوں کے چند آلہ کار کی ہرتال کی کال سے لاتعلق رہ کر ثابت کیا ہے کہ وہ ملک میں معاشی و تجارتی سرگرمیوں کا فروغ چاہتے ہیں،ملک مشکل معاشی حالات سے گزر رہا ہے حکومت قومی معیشت کے استحکام کیلئے کوشاں ہے ایسے میں ہڑتال مناسب نہیں اسی لئے تاجربرادری نے ہڑتال کی کال پر کان نہیں دھرے اور مارکیٹیں کھلی رہیں جس سے ملک میں افراتفری پھیلانے والوں کے عزائم ناکام ہوئے،تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اقتصادی امور حماد اظہر نے کہا ہے کہ تاجربرادری کی بڑی تعدادنے ہڑتال ردکر کے حب الوطنی کاثبوت دیا،بات چیت سے تمام خدشات دور کریں گے۔تاجروں کی ہڑتال پر رد عمل میں وزیر حماد اظہر نے کہا کہ سسلین مافیا جسے منی لانڈرنگ، جعلی کاغذات، رشوت اور ججز کو دباؤمیں لانا ورثے میں ملا ہے، فیصلہ کیا ہے کہ وہ پاکستان میں ٹیکس چوری اور بلیک اکانومی کی حمایت جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہاکہ ایک جزوی اور منقسم ہڑتال کو سیاسی طور پر استعمال کرنے کی ناکام کوشش کی جا رہی ہے۔حماد اظہر نے پاکستان بھر میں کی جانیوالی تاجروں کی ہڑتال کا بائیکاٹ کرنے اور پاکستان کا ٹیکس کلچر تبدیل کرنے میں حکومت کا ساتھ دینے والے تاجروں کو سراہا۔انہوں نے بتایا کہ کاروبار کی ڈاکیومنٹیشن کیلئے حکومت تاجر تنظیموں سے رابطے میں ہے۔صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت نے کہا ہے کہ تاجر برادری معیشت میں اپنے کردار سے بخوبی واقف ہے، مہنگائی میں کمی خودسرمایہ داروں اور صنعتکاروں کے تعاون ہی سے ممکن ہے، معیشت کی بحالی برآمدات میں اضافے، درآمدات میں کمی اور مقامی مصنوعات سے استفادے کی متقاضی ہے،اس وقت ملک کسی انتشار کا متحمل  ہو سکتا ہے نہ معاشی پالیسیوں پر کوئی سمجھوتا ممکن ہے، تعلیم، صحت، کاروبار اور روزگار کا مطالبہ کرنے والے ٹیکس ادا کر کے خود اپنی ذمہ داری پوری نہیں کریں گے تو حکومت اپنے فرائض کیسے ادا کرے گی،حکومت کی جانب سے ٹیکس ادائیگی کا مطالبہ ناجائز نہیں اور نہ سرمایہ کاروں کے مسائل سے چشم پوشی اختیار کی جا رہی ہے، موجودہ حکومت کاروبار میں آسانی، صنعت و سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے جو اقدامات اُٹھا رہی ہے ماضی میں ان کے صرف خواب دکھائے گئے۔صوبائی وزیر خزانہ کی جانب سے پنجاب میں تاجر ایسوسی ایشنز کے نام پیغام میں کیا گیا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ تاجر حضرات سیاسی قوتوں کے ہاتھوں یرغمال بننے کی بجائے پاکستان کا ساتھ دیں اور تالہ بندیوں اور ہڑتالوں کی شکل میں عوامی مشکلات میں اضافے کی بجائے کاروبار اور مقامی پیداوار میں اضافے پر توجہ مرکوز کریں۔وزیر قانون وبلدیات راجہ بشارت نے بعض تاجر تنظیموں کی جانب سے کی گئی ہڑتال کی ناکامی پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس ہڑتال کی ناکامی درحقیقت حکومت کی کامیابی ہے اور ہم ہڑتال میں حصہ نہ لینے والی محب وطن تاجر برادری کوخراج تحسین پیش کرتے ہیں. انہوں نے کہا کہ یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ قوم اب باشعور ہو چکی ہے اور وہ تخریب کار عناصر کے جھانسے میں آنے والی نہیں۔صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ ملک کسی صورت ہڑتالوں کا متحمل نہیں ہوسکتا، حکومت ورثے میں ملنے والی بیمارمعیشت کی بحالی کیلئے مشکل فیصلے کرنے پر مجبور ہوئی ہے تاہم ان مشکل فیصلوں سے آنے والے وقت میں عوام کو فائدہ ہوگا- انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے چند آلہ کاروں نے معاشی و تجارتی سرگرمیوں کو متاثر کرنے کی کوشش کی لیکن وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہوئے-حکومت نے تاجروں کے تمام جائز مسائل حل کئے ہیں اور حکومت تاجروں کے ساتھ کھڑی ہے انہیں کاروبار کے لئے ہرممکن سہولتیں اور تحفظ دیں گے،صوبائی وزیر نے کہا کہ ملک کے نظام ٹیکسوں پر چلتے ہیں، رجسٹریشن کے عمل سے صرف انہی لوگوں کیلئے پریشانی ہورہی ہے جنہوں نے کبھی ٹیکس نہیں دیا اور نہ ہی وہ ٹیکس کے نظام میں آنا چاہتے ہیں اب ایسا نہیں ہوگا- چھوٹے دکانداروں پر کوئی ٹکس نہیں لگایا گیا تاہم جو مین ڈیلر ملوں کے ساتھ کاروبار کرتے ہیں انہیں ٹیکس نیٹ میں لائیں گے۔وزیرہاؤسنگ میاں محمودالرشید نے کہا ہے کہ تاجربرادری نے بعض نام نہاد تاجرتنظیموں کی ہڑتال کی کال سے لاتعلق رہ کر ملکی معیشت کے خلاف کی جانے والی سازش کو ناکام بنادیا، وہ ملکی معیشت کی بہتری کے لئے اٹھائے گئے حکومتی اقدامات سے مکمل طور پر مطمئن ہیں - انہوں نے کہا کہ تاجر برادری نے ہڑتال کی کال کو ناکام بنا کرثابت کردیا ہے کہ وہ اپنی صفوں میں موجود کالی بھیڑوں سے مکمل طور پر آگاہ ہیں اور کسی صورت ان کے جھانسے میں نہیں آ ئیں گے،ہڑتال کو ناکام بنانے پر تاجربرادری مبارکبادکی مستحق ہے۔ صوبائی وزیر برائے معدنیات حافظ عمار یاسر نے کہا ہے کہ ہڑتال صرف اس مقصد سے کی گئی کہ حکومت کے عوام دوست معاشی اقدامات کے ثمرات سے عوام کو محروم رکھا جاسکے۔ سابق بددیانت حکومت اور ان کے حواری ہی دراصل اس ڈرامہ کے ہدائیتکار ہیں۔ مگر آج ہمارے حقیقی تاجر بھائیوں نے اس مصنوعی ہڑتالی ڈرامے کا بائیکاٹ کر کے وزیر اعظم عمران خان اور ان کی تاجر دوست پالیسیوں پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر برائے معدنیات حافظ عمار یاسر نے تاجر برادری کے ایک مخصوص گروہ کی جانب سے ہڑتال کے فلاپ ڈرامہ پر تبصرہ کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ عوام اب ان کرپٹ عناصر کے کسی بہکاوے میں نہیں آئیں گے۔ صوبائی وزیر اوقاف پیر سید سعید الحسن شاہ اور سیاسی معاون وزیر اعلیٰ پنجاب سید رفاقت علی گیلانی نے کہا ہے کہ عوام نے جیالا سیاست،متوالا سیاست اور دیگر سیاستدانوں کی طرف سے ہڑتال کی کال کویکسر مستردکر کے ثابت کر دیا ہے کہ اب وہ کسی کے جھانسے میں نہ آئیں گے اور ماضی کی غلطیوں کا ازالہ کر کے ملک کی تعمیر و ترقی میں حائل تما م رکاوٹوں کو دور کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہڑتال پر عاقبت نا اندیش سیاستدانوں نے اپنے اپنے دور حکومت میں کونسا ایسا کارنامہ سر انجام دیا ہے کہ عوام اب ان کے کسی جھانسے میں آئیں۔ حکومت نے پاکستان کو محفوظ تر بنانے کے لئے معیشت کو عروج دوام بخشنے کے لئے ملک کو ترقی کی طرف کامزن کر دیا ہے۔

حکومتی وزراء 

مزید : صفحہ اول