13جولائی 1931 کوشہید کشمیریوں کوخراج تحسین پیش کرنے کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع

        13جولائی 1931 کوشہید کشمیریوں کوخراج تحسین پیش کرنے کی قرارداد پنجاب ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) 13جولائی 1931 کو اذان کی حرمت پر شہید ہونے والے کشمیریوں کو خراج تحسین پیش کرنے کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کروادی گئی ہے یہ قرارداد تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی مسرت جمشید چیمہ کی جانب سے جمع کروائی گئی ہے جس کے متن میں کہا گیا ہے کہ 13جولائی کا دن 1931میں کشمیر کی آزادی کی خاطر جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والوں کی یاد میں بطور یوم شہدائے کشمیر منایا جاتا ہے۔ اس دن سری نگر میں مرد مجاہد عبدالقدیر خان کے کیس کی سماعت تھی۔جیل کے باہر 22 کشمیری مسلمان اذان ظہر مکمل کرتے ہوئے ڈوگرہ سپاہیوں کی فائرنگ سیایک کے بعد ایک شہید ہوئے تھے۔متن میں مزید کہا گیا ہے کہ اس سفاکانہ واقعہ نے کشمیریوں کے دلوں میں حریت پسندی کے جذبے کو جنم دیا جو آج تک قائم ہے۔یہ ایوان سمجھتا ہے کہ قیامِ پاکستان کے بعد بھارت نے مقبوضہ کشمیر پر جبراً قبضہ کیا۔ آج تک لاکھوں کشمیری شہیدہوئے، ماؤں اور بہنوں کی عزتیں محفوظ نہ رہیں، بچے یتیم ہوئے لیکن کشمیریوں کا جذبہ ایمانی اور جذبہ حق خودارادیت اپنی جگہ قائم ہے۔یہ بھی اٹل حقیقت ہے کہ کشمیرکی آزادی کے متوالوں کو نہ پہلے کوئی ظلم روک سکا ہے نہ آئندہ کوئی جبر روک سکے گا۔یہ ایوان یہ بھی سمجھتا ہے کہ بھارتی حکومت اور فوج اقوام متحدہ، او۔آئی۔سی اور دیگر بین الاقوامی اداروں کی قراردادوں اور دستاویزات کے مطابق کشمیری قوم کو حق خودارادیت دینے میں براہ راست رکاوٹ ہیں۔"صوبائی اسمبلی پنجاب کا یہ ایوان 13جولائی 1931کو اذان کی حرمت پر شہید ہونے والے کشمیریوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہے۔

قرارداد جمع

مزید :

صفحہ آخر -