25گھروں میں غیر قانونی گیس کنکشن کے 2نیٹ ورک پکڑے گئے

25گھروں میں غیر قانونی گیس کنکشن کے 2نیٹ ورک پکڑے گئے

  

لاہور(خبرنگار) ایم ڈی سوئی گیس کمپنی عامر طفیل کی ہدایت پر جی ایم سوئی گیس لاہور ریجن شہزاد اقبال لون کی نگرانی میں ٹاسک فورس نے گزشتہ دو دنوں کے دوران مختلف مقامات پر چھاپوں کے دوران لاکھوں روپے کی ماہانہ چوری ہونے والی گیس پکڑ لی۔ جی ایم سوئی گیس کمپنی لاہور ریجن شہزاد اقبال لون کے مطابق سوئی گیس کی ویجیلینس ٹیموں کی رپورٹ میں انہیں بتایا گیا کہ ٹاؤن شپ، گلبرگ، رائے ونڈ روڈ، بادامی باغ اور کاہنہ میں جعلی نیٹ ورک سمیت گھریلو میٹروں سے گیس چوری کی جا رہی ہے۔ جس پر چیف انجینئر شہزاد احمد، انجینئر علی احمد، ڈسٹری بیوشن آفیسرچودھری شرافت حسین سمیت دیگر افسران اور ملازمین پر مشتمل ایک سپیشل ٹاسک فورس تشکیل دی گئی اور اس سپیشل ٹاسک فورس نے رائیونڈ روڈ پر چھاپہ مارا تو وہاں پر جعلی طریقہ سے سوئی گیس کی مین سپلائی لائن سے 15 گھروں کا نیٹ ورک پکڑا گیا۔ جہاں سے آپریشن کے دوران پائپ لائن قبضہ میں لے کر تھانہ رائے ونڈ میں مقدمہ درج کروانے کے لئے درخواست جمع کروا دی گئی ہے۔ اسی طرح ٹاؤن شپ میں چھاپہ مارا گیا تو وہاں پر 10 گھروں کا جعلی نیٹ ورک پکڑا گیا ہے جس میں گیس چوری میں استعمال ہونے والا پلاسٹک کا پائپ اور دیگر سامان قبضہ میں لے کر تھانہ ٹاون شپ میں مقدمہ درج کروانے کیلئے درخواست جمع کروا دی گئی ہے۔ جی ایم سوئی گیس کمپنی لاہور ریجن شہزاد اقبال لون کے مطابق گلبرگ کے علاقہ میں سپیشل ٹاسک فورس نے چھاپہ مارا تو وہاں پر بڑے پیمانے پر گھریلو میٹر سے کیٹرنگ یونٹ پکڑا گیا ہے۔ بادامی باغ اور کاہنہ کے علاقوں میں سپیشل ٹاسک فورس نے چھاپے مارے تو وہاں پر بھی گھریلو میٹروں سے بڑے پیمانے پر گیس چوری کی جا رہی تھی جس میں کاہانہ میں گھریلو میٹر سے سویٹ شاپ کو گیس فراہم کی جا رہی تھی۔بادامی باغ میں دودھ دہی اور مٹھائی کی دکان پر گھریلو میٹر سے کمرشل گیس کا استعمال پایاگیا۔ جی ایم سوئی گیس کمپنی شہزاد اقبال لون کے مطابق تینوں مقامات سے گھریلو گیس میٹرز قبضہ میں لے لئے گئے اور گیس چوروں کے خلاف تھانہ بادامی باغ، تھانہ کاہنہ اور تھانہ گلبرگ میں مقدمات درج کروانے کے لئے درخواستیں جمع کروا دی گئی ہیں، جبکہ گیس چوروں کو لاکھوں روپے کے جرمانے الگ سے ڈالے جا رہے ہیں جس کے لئے قبضہ میں لئے جانے والے گھریلو گیس میٹروں کو لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے اور لیبارٹری کی رپورٹ آنے پر گیس چوروں سے گیس چوری کے ڈی ٹیکشن بل وصول کئے جائیں گے۔

گیس چوری

مزید :

صفحہ آخر -