کورونا وباء، مویشی منڈیوں کے اوقات صبح 6تا شام7بجے مقرر، خریداروں کی سخت سکریننگ کا فیصلہ

      کورونا وباء، مویشی منڈیوں کے اوقات صبح 6تا شام7بجے مقرر، خریداروں کی سخت ...

  

لاہور (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر اسد عمر کی زیرصدارت این سی او سی اجلاس میں مویشی منڈیوں کے اوقات کار صبح چھ سے شام سات بجے مقرر کر دیئے گئے، خر ید اروں کی سختی سے اسکریننگ اور فیس ماسک، سماجی فاصلے سمیت ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔چیئرمین اسد عمر اور نیشنل کوآرڈی نیٹر لیفٹیننٹ جنرل حمودالزمان کی سربراہی میں این سی او سی کا خصوصی اجلاس لاہور میں ہوا، اسلام آباد، آزاد جموں و کشمیر اور دیگر صوبوں کے نمائندے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔ اجلاس میں عیدالاضحی پر ایس او پیز پر عمل درآمد اور مویشی منڈیوں کی مینجمنٹ کے سلسلے میں تمام صوبوں نے بریفنگ دی، ہاٹ سپاٹ ایریاز، سمارٹ لاک ڈاؤن، کونٹیکٹ ٹریسنگ کے حوا لے سے خصوصی جائزہ لیا گیا، کورونا کیخلاف پاکستان کی کوششوں کو بہتربنانے کیلئے انفارمیشن ٹیکنالوجی، ڈیجیٹل پلیٹ فارمز اور مختلف ڈیجیٹل ایپلی کیشن کے استعمال کا بھی جائزہ لیا گیا۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ عید الاضحی کے موقع پر ملک بھر میں 700 کے قریب مویشی منڈیاں لگائی جائیں گی اور مویشی منڈی کے اوقا ت کار صبح 6 سے شام 7 بجے تک ہونگے جبکہ صحت سے متعلق ضروری ہدایات صوبوں اور انتظامی اداروں کو جاری کردی گئی ہیں، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ مویشی منڈیوں کی تعد ا د بڑھائی جائیگی تاہم حجم چھوٹا ہوگا جبکہ عیدالاضحی کے نمازوں کے حوالے سے عید الفظر کے پلان کو فالو کیاجائیگا۔دریں اثنا چیف کارپوریشن آفیسر سید علی عباس بخاری نے کہا کہ منڈیاں شہری آبادی سے دو سے 45کلو میٹر دورلگائی جائیں گی اور عید سے 10روز قبل مکمل فعال ہوں گی۔ شالامار،عزیز بھٹی اور سمن آباد زونز میں منڈیاں نہیں لگائی جائیں گی۔ ہر مویشی منڈی میں محکمہ لائیو سٹاک اور ہیلتھ کا کیمپ ہوگا۔ جانوروں کو کلیئر کرکے منڈیوں تک بھیجا جائے گا۔ منڈی میں صرف 2افراد کو جانے کی اجازت ہوگی۔ منڈی میں ماسک پہننا ضروری ہوگا اور جانوروں کو بھی فاصلے سے دیکھا جا سکے گا۔دریں اثنا ء پنجاب حکومت نے بچوں، بوڑھوں اور بیمار لوگوں پر مویشی منڈی جانے پر پابندی عائد کر دی۔محکمہ داخلہ پنجاب نے مویشی منڈیوں،نماز عید اورسکیورٹی سے متعلق 20 نکاتی پلان جاری کردیا ہے، جس کے تحت مویشی منڈیاں شہر سے باہر لگائی جائیں گی، بچے، بوڑھے اور بیمار افراد مویشی منڈی نہیں جاسکیں گے۔ مویشی منڈیوں میں ماسک اور سینی ٹائزر کا استعمال یقینی بنایا جائے گا۔20 نکاتی پلان کے تحت شہروں کو جانیوالے راستے پر سکیورٹی اہلکار تعینات ہوں گی، کالعدم تنظیمیں قربانی کی کھالیں اکٹھی نہیں کر سکیں گی، عیدالاضحی کی نماز فاصلہ رکھ کر کھلے میدان یا مسجد میں ادا کی جا سکیں گی۔

این سی او سی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹرز، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)پاکستان میں کورونا وائرس سے مزید 47 افراد جاں بحق ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 5304 ہوگئی اور نئے کیسز سامنے آنے سے کْل کیسز 252982 تک جاپہنچے۔اب تک پنجاب میں 2013، سندھ میں 1826 اور خیبر پختونخوا میں 1106 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جبکہ اسلام آباد میں 153، بلوچستان میں 126، آزاد کشمیر میں 44 اور گلگت بلتستان میں 36 افراد کا انتقال ہوا ہے۔ملک بھر سے کورونا کے مزید 1977کیسز اور 47 ہلاکتیں رپورٹ ہوئیں جن میں سندھ سے 31 ہلاکتیں اور 1089 کیسز، پنجاب سے 487 کیسز 7 ہلاکتیں جبکہ خیبرپختونخوا سے 7 ہلاکتیں (جن میں گزشتہ دنوں ہونیوالی 4 اموات شامل ہیں) اور 261 کیسز رپورٹ ہوئے۔اس کے علاوہ اسلام آباد سے 85 کیسز اور ایک ہلاکت، آزاد کشمیر 35 کیسز اور ایک ہلاکت جبکہ گلگت بلتستان سے 13 اور بلوچستان سے 7 کیسز سامنے آئے۔پنجاب سے کورونا کے 487 کیسز اور 7 ہلاکتیں رپورٹ ہوئی ہیں جن کی تصدیق پی ڈی ایم اے کی جانب سے کی گئی ہے۔صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے مطابق پنجاب میں کورونا کے مریضوں کی کْل تعداد 87043 اور ہلاکتیں 2013 ہوچکی ہیں۔پی ڈی ایم اے کے مطابق پنجاب میں اب تک کورونا کے 58023 مریض صحت یاب بھی ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا کے مزید 85 کیسز اور ایک ہلاکت سامنے آئی ہے جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کی گئی ہے۔پورٹل کے مطابق اسلام آباد میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 14108 اور ہلاکتیں 153 ہوگئی ہیں۔اس کے علاوہ شہر میں کورونا سے صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 11332 ہوگئی ہے۔گلگت بلتستان سے کورونا کے مزید 13 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کے بعد وہاں اب تک مریضوں کی تعداد 1671 ہوگئی ہے جبکہ وہاں اموات کی تعداد 36 ہے۔گلگت میں کورونا سے صحت یاب ہونیوالوں کی تعداد 1319 ہے۔آزاد کشمیر سے کورونا کے مزید 35 نئے کیسز اور ایک مریض کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔آزاد کشمیر میں اب تک مجموعی طور پر 1599 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ وہاں اموات کی تعداد 44 ہے۔آزاد کشمیر میں اب تک کورونا سے 978 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں۔بلوچستان سے کورونا کے مزید 7 کیسز سامنے آئے جس کے بعد صوبے میں متاثرہ مریضوں کی تعداد 11192 ہوگئی ہے۔صوبے میں کورونا سے اب تک 126 افراد انتقال کرچکے ہیں۔اس کے علاوہ بلوچستان میں اب تک کورونا سے 7812 مریض صحتیاب بھی ہوچکے ہیں۔سندھ میں کورونا سے مزید 31 افراد انتقال کرگئے جس کے بعد صوبے میں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 1826 ہوگئی۔گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 1089 افراد میں مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جس کے بعد متاثرہ مریضوں کی تعداد 106622 تک جاپہنچی ہے۔صوبے میں صحت یاب مریضوں کی تعداد 63829 ہوگئی ہے جو کہ مجموعی کیسز کا 60 فیصد ہے۔خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس کے باعث مزید 7 افراد انتقال کرگئے جس کے بعد صوبے میں ہلاکتوں کی تعداد 1106 ہوگئی۔صوبائی محکمہ صحت کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 261 افراد میں مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جس کے بعد صوبے میں متاثرہ مریضوں کی تعداد 30747 تک پہنچ گئی ہے۔اب تک صوبے میں 21312 افراد کورونا وائرس سے صحت یاب بھی ہو چکے ہیں۔ادھربھارت میں کورونا وائرس کے کیسز میں ایک مرتبہ پھر ریکارڈ اضافہ نوٹ کیا گیا ہے۔ بھارتی ٹی وی کے مطابق پیر کو بتایا گیا ہے کہ ملک بھر میں پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران اٹھائیس ہزار سے زائد نئے کیسز ریکارڈ کیے گئے اور یوں مجموعی طور پر اب ملکی سطح پر متاثرین کی تعداد پونے نو لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔ بھارت میں اب تک تیئس ہزار سے زائد افراد کووڈ انیس کی وجہ سے موت کا شکار ہو چکے ہیں۔ نئی دہلی، ممبئی، چنئی، بینگلور اور پونے میں بالخصوص کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ بھارت سب سے زیادہ متاثرہ ملکوں کی فہرست میں امریکہ اور برازیل کے بعد تیسرے نمبر پر ہے۔

کورونا اموات

مزید :

صفحہ اول -