احمد پور شرقیہ:فاریسٹ رینج میں مبینہ کرپشن، ملازمین سے ریکارڈ طلب

  احمد پور شرقیہ:فاریسٹ رینج میں مبینہ کرپشن، ملازمین سے ریکارڈ طلب

  

احمد پور شرقیہ (تحصیل رپورٹر) ملک حضور بخش صدر انجمن حقوق (بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

شہریان ضلع بہاولپور نے ایک درخواست وزیر اعلیٰ پنجاب ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن پنجاب لاہور، چیف سیکریٹری پنجاب، ڈائریکٹر فاریسٹ محکمہ جنگلات پنجاب لاہور، سیکریٹری محکمہ جنگلات پنجاب لاہور کو دی جس میں انکشاف کیا گیا تھا کہ فاریسٹ رینج آفیسر شبیر احمد شاہ کی سرپرستی میں بلاک آفیسر غضنفر رشید، بلاک آفیسر مولوی منیر احمد، فاریسٹ گارڈ رانا حفیظ احمد، محمد عاشق، عامر شہزاد نے ملی بھگت کرکے اپنی اپنی بیٹوں میں سینکڑوں کی تعداد میں قیمتی درخت رات کے اندھیرے میں بیچ دیئے بلکہ یہ سلسلہ تاحال جاری ہے۔ سب سے زیادہ قیمتی درخت جن میں کیکر، شیشم کے درخت شامل ہیں۔ رانا حفیظ، غضنفر رشید اور محمد عاشق نے بیج کھائے ہیں ان کی سرپرستی رینج آفیسر شبیر احمد شاہ کر رہا ہے شبیر احمد شاہ فی فاریسٹ گارڈ ایک لاکھ روپے مہینہ رشوت لیتا ہے اسی طرح وہ چھڑ تراشی اور دوسری مدوں میں لاکھوں روپے کا ٹیکہ اس وقت تک لگا چکے ہیں۔ جس پر ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن پنجاب لاہور نے ڈائریکٹر انٹی کرپشن بہاولپور کو انکوائری آفیسر مقرر کرتے ہوئے ایک ماہ کے دوران تحقیقات مکمل کرکے رپورٹ کرنے کا حکم دیا۔ ڈائریکٹر انٹی کرپشن بہاولپور نے کرپٹ فاریسٹ ملازمین سے فوری ریکارڈ طلب کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ اس کی مکمل انکوائری کی جائے گی گزشتہ روز فاریسٹ ملازمین نے پورا ریکارڈ پیش کر دیا ہے ایک اندازے کے مطابق 20کروڑ روپے سے زیادہ کی کرپشن ہو چکی ہے اس موقع پر ملک حضور بخش نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فاریسٹ محکمہ جنگلات کے ملازمین نے انٹی کرپشن میں انتہائی بوگس اور جعلی ریکارڈ پیش کیا ہے رات کو اندھیرے میں بڑے بڑے ٹرالے اور ٹرالیاں لوڈ کرکے دوسرے شہروں میں بڑے بڑے ٹمبر لوڈ کرکے بھیجے جاتے ہیں اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے بوقت انکوائری ثبوت مہیا کیئے جائیں گے اس سلسلہ میں جب فاریسٹ رینج آفیسر شبیر احمد شاہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ انکوائری جاری ہے الزامات درست نہیں ہیں۔

ریکارڈ طلب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -