مہنگے داموں دودھ اور روٹی فروخت کرنے پر 25 افراد گرفتار

  مہنگے داموں دودھ اور روٹی فروخت کرنے پر 25 افراد گرفتار

  

پشاور(سٹی رپورٹر) محکمہ خوراک نے مہنگے داموں دودھ اور روٹی فروخت کرنے پر 25 افراد کو حراست میں لے لیا۔ صوبائی وزیر خوراک الحاج قلندر لودھی‘ سیکرٹری خوراک فلائیٹ لیفٹیننٹ (ر) خوشحال خان اور ڈائریکٹر محکمہ خوراک محمد زبیر کی ہدایت پر راشننگ کنٹرولر پشاور آفتاب عمر کی زیر نگرانی اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولرز تسبیح اللہ‘ نعمان عامر اور فوڈ انسپکٹر محسن علی شاہ نے رنگ روڈ‘ کوہاٹ روڈ‘ کارخانوں مارکیٹ‘ ناصر باغ روڈ‘ یونیورسٹی ٹاؤن اور ملحقہ علاقوں میں عام شہری کے روپ میں نانبائیوں اور دودھ کی دکانوں میں خریداری کی جہاں پر نانبائی بیس روپے میں سنگل کے بجائے ڈبل روٹی فروخت کر رہے تھے جس کا وزن بھی کم تھا جبکہ دودھ فروش 130 روپے فی کلو دودھ فروخت کر رہے تھے جس پر محکمہ خوراک کے افسران نے کارروائیاں کرتے ہوئے مذکورہ علاقوں سے 25 دودھ فروشوں اور نانبائیوں کو گرفتار کرلیا۔ راشننگ کنٹرولر پشاور آفتاب عمر نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ گرانفروشی ناقابل معافی جرم ہے جس کے مرتکب افراد کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جائیگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ خوراک کے افسران دن رات شہر کے مختلف علاقوں میں دورے کر کے شہریوں کو معیاری اور سرکاری نرخ کے مطابق اشیائے خوردونوش کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گرانفروش کسی صورت میں بھی محکمہ خوراک کے شکنجے سے بچ نہیں سکتے جن کے گرد گھیرا تنگ کردیا گیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -