پشاور،بینکویٹ ہالز ایسوسی ایشن کا شادی ہالوں کی بندش کیخلاف مظاہرہ

پشاور،بینکویٹ ہالز ایسوسی ایشن کا شادی ہالوں کی بندش کیخلاف مظاہرہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر)خیبرپختونخوا بینکویٹ ہالز ایسو سی ایشن نے شاد ی ہالز اور ہوٹلز کے بندش کے خلاف پشاور پری کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر انکے حق میں مطالبات درج تھے مظاہرے کی قیادت خان گل اور ددیگر ساتھیوں نے کی اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ شادی ہالز اور ہوٹلز پچھلے چار ماہ سے بند ہیں جسکی وجہ سے شادی ہالز کاروبار سے وابستہ افراد فاقہ کشی پر مجبور ہے تاہم حکومت نے دیگر کاروبار ایس او پیز کیساتھ کھلے لیکن شادی ہالز کو بد ستور بند رکھ کر ہزاروں ملازمین کو بے روزگار کیا ہے انہوں نے کہا کہ تعلیمی ادارے بھی ایس او پیز کیساتھ کھولنے کی تیاریاں ہو رہی ہے جبکہ شاددی ہالز اور ہوٹلز کو بند رکھنا سمجھ سے بالاتر ہے انہوں نے کہا کہ ایک شادی ہال میں 100سے زائد ملازم کام کرتے ہیں تاہم صوبہ بھر میں کورونا وباء کے پیش نظر شادی ہالز کے بندش سے شادی ہالز میں کام کرنیوالے ہزاروں ملازمین بے روزگار ہوئے جبکہ زیادہ تر شاددی ہالز کرایہ پر ہونے کے باعث مالکان کے پاس کرایہ ادا کرنے کے پیسے تک نہیں اور بچوں کے سکول فیس ادا کرنے کے بھی پیسے نہیں ہے انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ شادی ہالز اور ہوٹلز کا معاشی قتل عام بند کیا جائے اور شادی ہالز اور ہوٹلز کو دیگر کاروبار کی طرح ایس او پیز کیساتھ کھول دئے جائے جبکہ شادی ہالز اور ہوٹلز کا بنددش کے باعث نقصنات کا ازالہ کرنے کیلئے امدادی پیکج کا اعلان بھی کیا جائے بصورت دیگر احتجاج کا دائرہ کار وسیع کرینگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -