اساتذہ کی تنظیم کا یونیورسٹی میں ملازمتوں پر پابندی کیخلاف

    اساتذہ کی تنظیم کا یونیورسٹی میں ملازمتوں پر پابندی کیخلاف

  

پشاور(سٹی رپورٹر)حکومت کی جانب سے پشاور یونیورسٹی میں ملازمتوں پر پابندی کے خلاف اساتذہ کے تنظیم انٹلکچول گروپ نے احتجاجی مظاہر کیا اور ملازمتوں پر پابندی کو غیر ائینی قرار دیتے ہوئے اس کے خلاف بھوک ہڑتال کی دھمکی دی،احتجاج پیوٹا ہال سے شروع ہوا مظاہرین کی قیادت انٹلکچول گروپ کے صدر پروفیسر عارف خان کررہے تھے مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینر اٹھا رکھے تھے جس پر حکومت اور یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف نعرے درج تھے اس موقع پر مظاہرین نے حکومت اور یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی بھی کی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ حکومت نے یونیورسٹی میں ملازمتوں پر پابندی عائد کی ہے جس کی وجہ سے کنٹریکٹ پر بھرتے ہونے والے ملازمین کا مستقل داو پر لگا ہوا ہے اور اس ماہ بھی 18 سے زائد اساتذہ کا کنٹریکٹ ختم ہورہا ہے جبکہ پابندی کی وجہ سے انکی مستقلی کے احکامات جاری نہیں ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ ملازمتوں پر پابندی غیر قانونی ہے اور اس کو فوری طور پر ختم ی جائے حکومت اساتذہ کا استحصال ختم کرے اور کنٹریکٹ پر بھرتی ملازمین کو فوری طور پر مستقل کریں جبکہ اساتزہ کے سلیکشن کا مرحلہ پورا کر کے ان کے تقرری کے احکامات جاری کریں۔ اگر حکومت نے انکے مطالبات پورے نہ کئے تو احتجاج کے دائرہ کار کو مزید وسیع کیا جائے گا اور دھمکی دی کہ اگر انکے مطالبات منظور نہ کیے گئے تو بھوک ہڑتال شروع کی جائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -