عدالتی نظام کی ڈیجیٹلائزیشن ہونے کو ہے، سید علی ظفر

عدالتی نظام کی ڈیجیٹلائزیشن ہونے کو ہے، سید علی ظفر

  

اسلام آباد(خصوصی رپورٹ)وزیر اعظم عمران خان پاکستان میں عدالتی نظام کو جدید خطوط پر استوار کرنے کیلئے عدالتی عمل کو ڈیجیٹلائزکرنے کیلئے پرعزم ہیں۔حکومت ای کورٹس کے قیام کیلئے نیکسٹ جنریشن آف جسٹس پورٹل کی تیاری کیلئے سہولت فراہم کرے،یہ بات بیرسٹر سید علی ظفر نے ”عدلیہ اور بار کو کوویڈ19سے کس طرح نمٹنا چاہیئے“ کہ موضوع پر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی، تقریب کا اہتمام سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن آف پاکستان نے کیا تھا جس کے مہمان خصوصی جسٹس مشیرعالم تھے۔جسٹس مشیر عالم نے بیرسٹر سید علی ظفر کے ذریعے ارسال کئے گئے وزیر اعظم عمران خان کے پیغام کو سراہتے ہوئے کہ عدلیہ اس پر کام کررہی تھی اور ہم مقدمات کو جلد از جلد نمٹانے کیلئے عدالتی نظام کو جدید بنانے میں انتہائی دلچسپی رکھتے ہیں اور حکومت سے اس کے نفاذ کیلئے ضروری فندز اور تعاون کا مطالبہ کیا۔

عدلیہ اور ایگزیکٹیو نظام کی بہتری کیلئے ٹیکنالوجی کے استعمال اور لوگوں کی بہتر خدمت کیلئے ایک صفحہ پر ہیں جو کہ حقیقی اسٹیک ہولڈر ہیں۔بیرسٹر علی ظفرنے مزید کہا کہ صحت کے امور کو مد نظر رکھتے ہوئے عدالتیں بند کرنا پڑیں جو کہ حالات کو دیکھتے ہوئے درست فیصلہ تھا،تاہم ہم لوگوں کو کورونا وائرس کے لاحق مستقل خطرات کے باعث انصاف تک رسائی سے نہیں روک سکتے،لہذا بیرسٹر علی ظفر نے زور دیا کہ ہمیں اس مسئلے کے حل کیلئے سوچنے کی ضرورت ہے اور طویل مدتی حل کے طور پر قانونی عمل کی ڈیجیٹلائزیشن متعارف کرانا ہوگی۔

مزید :

صفحہ آخر -