الخدمت تاجران کی چائے اور کاسمیٹکس کے گوداموں پر چھاپوں کی مخالفت

  الخدمت تاجران کی چائے اور کاسمیٹکس کے گوداموں پر چھاپوں کی مخالفت

  

پشاور(سٹی رپورٹر) الخدمت تاجران ڈسٹرکٹ پشاور نے کسٹم اہلکاروں کی طرف سے اندرون شہر چائے اور کاسمٹیکس کے تاجروں کے دوکانوں اور گوداموں پر چھاپوں کی مخالفت کردی۔ کسٹم کے اعلیٰ حکام اپنے اہلکاروں پر بارڈرز پر اسمگلنگ روکنے پر مامور کریں۔ غریب اور چھوٹے دکانداروں کو بیجا تنگ کرنے سے گریز کیا جائے۔ الخدمت تاجران ڈسٹرکٹ پشاور کے کورکمیٹی کا ایک اہم اجلاس زیر صدارت امیر جماعت اسلامی پشاور عتیق الرحمن منعقد ہوا۔ جس میں جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی پشاور قاری احمدسعید، الخدمت تاجران کے چیئرمین اور صدرخیبربازار خالدمحمود، حاجی سیف اللہ، صدر الخدمت تاجران ضلع پشاور خالدگل مہمند، جنرل سیکرٹری عرفان پراچہ،صدر الخدمت تاجرن سٹی شہزاداحمد جان نے خصوصی شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی پشاور کے امیر عتیق الرحمن نے کہاکہ موجودہ حکومت عوام اور تاجروں کو ریلیف دینے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے۔ کورونا کے باعث تاجروں کے اربوں روپوں کا کاروبار تباہ وبرباد ہوچکا ہے اور اب سرکاری ادارے دکانداروں کو مختلف بھانوں سے تنگ کرکے عوام اور تاجروں کو احتجاج پر مجبور کررہی ہیں۔ اس موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر الخدمت تاجران پشاور خالدگل مہمند نے کہاکہ سرکاری مشینری اور خاص اے سی حضرات نے پشاور کے تاجروں کے ناک میں دم بند کرکے رکھ دیا ہے۔ آئے روز مختلف بازاروں، مارکیٹوں کو مفت سیل کروادیتے ہیں اور پھر لاکھوں روپے جرمانہ کرکے چھوڑ دیتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کورونا کے باعث وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے تاجروں کو ایس او پیز اور ماسک کا پابند کیا ہوا ہے لیکن ہزاروں کی تعداد میں عوام بے غیر ماسک اور سوشل فاصلہ رکھے بغیر چل پھر رہے ہیں لیکن ملبہ صرف تاجروں پر ڈالا جارہا ہیں۔ الخدمت سٹی تاجران کے صدر شہزاداحمد جان نے کہاکہ اگر آئندہ کوئی بھی سرکاری اہلکار بمعہ کسٹم اور ایف بی آر والوں نے بغیر پیشگی اطلاع کے چھاپہ مارا تو پھر تاجر برادری حکومت اور سرکاری مشینری کے خلاف بھرپور احتجا ج کرے گی۔ آخر میں فیصلہ کیا گیا کہ اگست کے مہینے میں الخدمت تاجران کی طرف سے صوبائی اور ضلعی تاجروں کا ایک سمینار منعقد کیا گیا جس میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق اور مرکزی صدر تاجران چوہدری کاشف خصوصی شرکت کرینگے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -