ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات کے متعلق ڈپٹی کمشنر آفس عمرکوٹ کے دربار ہال میں اجلاس منعقد

ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات کے متعلق ڈپٹی کمشنر آفس ...
ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات کے متعلق ڈپٹی کمشنر آفس عمرکوٹ کے دربار ہال میں اجلاس منعقد

  

عمرکو ٹ (سید ریحان شبیر ) پاکستان پیپلزپارٹی ایم این اے نواب محمد یوسف ٹالپر اور سندھ کابینہ کے صوبائی وزیر انفارمیشن سائنس اور ٹیکنالوجی نواب محمد تیمورخان ٹالپر کی جانب سے ضلع عمرکوٹ میں ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات کے متعلق ڈپٹی کمشنر آفیس عمرکوٹ کے دربار ہال میں اجلاس منعقد کیا گیا ۔

اجلاس میں ڈپٹی کمشنر عمرکوٹ ندیم الرحمن میمن ، چیرمین ضلع کائونسل عمرکوٹ ڈاکٹر سید نور علی شاہ، وائس چیرمین حاجی بقا پلی ، پاکستان آرمی کے کیپٹن ارسلان ،ایس ایس پی عامر عباس شاہ، پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ آف پاکستان کے آفیسر جمن ، محکمہ زراعت ایڈیشنل ڈائریکٹر حسین بخش خاصخیلی اور دیگر محکموں کے آفسران نے شرکت کی ۔

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر ندیم الرحمن میمن نے ٹڈی دل کے خاتمے اور کئے جانے والے انتظامات کے حوالے سے ایم این اے نواب محمد یوسف ٹالپر کو مکمل بریفنگ دی ، اس موقع پرایم این اے نواب محمد یوسف ٹالپر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے سال وزیر اعظم کے حکم پر ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے نیشنل ایکشن پلان بنایا گیا تھا جس میں 12پلان بنائے گے جیسے منظور ی جنوری 2020 میں وزیر اعظم پاکستان نے دی مگر افسوس کے ساتھ اس نیشنل ایکشن پلان پر عملدآمد نہیں ہو سکتا جس کی وجہ سے صوبے سندھ میں زراعت کو نقصان ہوا۔  انہوں نے کہا کہ ضلع عمرکوٹ میں ٹڈی دل کی موجودگی کی اطلاع پر ہنگامی بنیادوں پران کے خاتمے کے لیے اقدامات کئے جائیں دیگر صورت میں یہ آفت بڑی تباہی لاسکتی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ سمندری راستے سے ٹڈی دل کی آمد کی معلومات ملی ہیں جو تقریب پچھلے سال کی نسبت اس سال 400 فیصد تعداد زیادہ بتائی جا رہی ہے جس کے خاتمے کے لیے وفاقی حکومت، سندھ حکومت اور پاکستان آرمی کے مشترکہ حکمت عملی اور پلان سے ان کو ختم کیا جائے گا،انہوں نے کہا کہ ٹڈی دل کے خاتمے کے لیے وفاقی حکومت اور پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ آف پاکستان سے نمائندوں سے مکمل رابطے میں ہوں تاکہ صوبے سندھ اور خصوصی طور پر ضلع عمرکوٹ اور تھرپارکر میں جھاز کے ذریعے باڈر ایریا پر اسپری کروا کر ٹڈی دل کا خاتمہ کیا جائے اور غریب کسانوں کے فصلوں کو تباہی سے بچایا جا سکے ۔

اس موقع پر سندھ کابینہ کے صوبائی وزیر انفارمیشن سائینس اور ٹیکنالوجی نواب محمد تیمورخان ٹالپر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹڈی دل کا فصلوں پر حملہ ایک قدرتی آفت ہے اور تمام کاشکاروں کو ان کے لیے احتیاتی تدابیر اختیار کرنا ہونگی ، انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ ٹڈی دل کے حملوں پر کنٹرول کرنے اور کے لیے کوشاں ہے اور یہ کام وفاق کے ٹیکنیکل محکمہ کے زمرے میں آتے ہیں اس سال بھی وفاقی حکومت نے ٹڈی دل کے خاتمے کے لیے کافی دیر کر دی ہے لیکن سندھ حکومت نے اس مسلے پر کبھی بھی کوئی بھی کوتاہی نہیں کی ہے ا ور سندھ میں جہاں پر ٹڈی دل کے حملے ہوں گے وہاں پر ٹڈی مار اسپرے کروایا جائے گا۔اس موقع پر ایم این اے نواب محمد یوسف ٹالپر نے اجلاس میں موجودپلانٹ پروٹیکشن ڈیپارمینٹ آف پاکستان کے آفیسر جمن اور محکمہ زراعت ایڈیشنل ڈائریکٹر حسین بخش خاصخیلی سے ضلع عمرکوٹ میں ٹڈی دل کے حملوں اور ٹڈی دل کے خاتمے کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات کے متعلق تفصیلی بریفنگ لی،اس موقع پر پلانٹ پروٹیکشن ڈیپارمینٹ آف پاکستان کے آفیسر جمن نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ اس وقت ضلع عمرکوٹ ٹڈی دل کی موجودگی کی اطلاع نہیں ملی ہیں اور ہماری تمام ٹی میں ضلع میں سروی کر رہی ہیں اور ٹڈی دل کے خاتمے کے پیسٹی سائیڈ ادویات کافی مقدار میں موجود ہے جس سے بر وقت ٹڈی دل کا خاتمے کیا جا سکتا ہے جبکہ کچھ گاڑیوں کی ضرورت ہے ۔

اس موقع پر محکمہ زراعت ایڈیشنل ڈائریکٹر حسین بخش خاصخیلی نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ اس وقت تک ضلع عمرکوٹ میں ٹڈی دل کا فصلوں پر کوئی بھی حملہ نہیں ہوا ہے پر ان سے بچاءوکے لیے استعمال ہونے والے تمام احتیاتی تدابیر کی آگاہی تمام کاشتکاروں کو دی گی ہے اور اگر کسی بھی جگہ کی نشاندہی کی جاتی ہے تو اس کے لیے وفاقی ادارے پلانٹ پروٹیکشن ایجنسی سے مدد لی جا سکتی ہے ، اس موقع پر ایم این اے نواب محمد یوسف ٹالپر نے سال 2020 کے الیکشن میں پریس کلب عمرکوٹ کی نئی منتخب باڈی کے صدر کامریڈ رسول بخش رحمدانی اور ان کی کابینہ کو مبارکباد پیش کی،بعد ازا صحافیوں کی جانب سے عمرکوٹ میں صاف پانی کی فراہمی سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پبلک ہیلتھ ایکسی این منصور کو ہدایت دیں ہیں کہ عمرکوٹ میں صاف پانی کے مسلے کو جلد سے جلد حل کیا جائے تاکہ لوگوں کو ان کا بنیادی حق مل سکے ، شرافت راجپوت قتل کیس کے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میں نے ایس ایس پی اور ڈی ایس پی کو ہدایات جاری کیں ہیں شرافت راجپوت کے ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار کر ان کے گھروں کو سیل کیا گیا ہے جبکہ ملزم کی ملکیت کو ضبط بھی کیا گیا ہے اور جلد ملزم کو گرفتار کیا جائے گا ۔ 

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -