مہمند،ٹریفک حادثے میں کار کا ڈرائیور جاں بحق،4 زخمی

  مہمند،ٹریفک حادثے میں کار کا ڈرائیور جاں بحق،4 زخمی

  

 مہمند(نمائندہ پاکستان) نحقی ٹنل کے اندر مخالف سمت سے آنے والی کوچ کی ٹکر سے سٹیٹ کار کا ڈرائیور جاں بحق۔چار افراد زخمی ہوگئیں۔ حادثہ ٹنل کے اندر تاریکی کی وجہ سے پیش آیا۔ ریسکیو کے عملہ نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر زخمی ہونیوالے افراد کو طبی امداد کیلئے ہیڈکوارٹر ہسپتال غلنئی کو لایا گیا۔ علاقے کے عوام نے اعلیٰ حکام سے ٹنل کے اندر ہروقت لائٹس آن رکھنے کا مطالبہ کردیا۔ٹنل میں لائٹس لگانے کی جنریٹر ذاتی کاموں کیلئے استعمال کیا جاتاہے۔ ذرائع کا انکشاف، تفصیلات کے مطابق منگل کے روز مہمند ایکسپریس ہائی وے روڈ پر واقع تحصیل حلیمزئی کے علاقہ نحقی ٹنل کے اندرسٹیٹ کار کے ڈرائیورٹائر پھٹنے کی وجہ سے نیا ٹائر لگارہا تھا کہ مخالف سمت باجوڑ سے آنیوالی کوچ نے ٹکر ماردیا۔ جس سے سٹیٹ کار کے مقامی ڈرائیور امین ولد حاجی محمد سکنہ یوسف خیل،عنایت ولد شیرزادہ سکنہ غلنئی، بلال ولد حسن خان اور دختر فضل الرحمن ساکنان پشاور شدید ز خمی ہوگئیں حادثہ کی اطلاع ملتے ہی ریسکیو 1122کے عملہ نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر زخمیوں کو طبی امداد کیلئے ہیڈکوارٹر ہسپتال غلنئی لایا گیا۔ جن میں مقامی کار کے ڈرائیور امین خان ولدحاجی محمد سکنہ یوسف خیل راستے میں ہی دم توڑگئے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹنل کے اندر حادثہ ہروقت لائٹس بند ہونے کی وجہ سے پیش آیا کیونکہ ٹنل کا جنریٹر ذاتی بجلی لگانے کی مقصد سے استعمال میں لایا جاتاہے۔ جس کی وجہ سے ٹنل کے اندر لائٹس بند رکھے جاتے ہیں جس کے باعث اکثر حادثات بھی پیش آتے رہتے ہیں۔ اس ضمن میں علاقے کے عوام نے مطالبہ کیا ہے کہ چار ارب روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے ٹنل کے اندر ہروقت لائٹس کو آن رکھا جائے تاکہ ٹنل کے اندر آئے روز بڑھتی ہوئی حادثات میں کمی واقع ہوسکیں۔ دوسری طرف ٹنل کے قریب عوام کیلئے بنایا گیا تفریحی پارک بھی مناسب دیکھ بھال نہ ہونے کی وجہ سے ابتر صورتحال کا شکار ہے۔ کیونکہ پارک میں لگائے گئے پودے اور اس کی چمن بھی سوکھ رہا ہے اس کی تعمیرکروڑوں روپے خرچ کی گئی ہے۔ اسی طرح مقامی ضلعی انتظامیہ، ٹی ایم اے سمیت متعدد سرکاری ادارے پارک کی دیکھ بھال میں ناکام ہیں۔لہٰذا پارک کی تعمیر کیلئے مالی اور دیگر عملہ بھی تعینات کیا جائے۔ جبکہ ٹنل میں حادثات سے بچنے کیلئے علٰیحدہ پولیس کی گشتی پارٹی بھی تشکیل دیا جائے تاکہ ٹنل کے اندر آئے روز بڑھتی ہوئی حادثات کا سدباب ہوسکیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -