کرمنلز ڈویژن، ڈی ایس پی مظہر ہراج کیخلاف مقدمہ درج کرنے کاحکم

کرمنلز ڈویژن، ڈی ایس پی مظہر ہراج کیخلاف مقدمہ درج کرنے کاحکم

  

 وہاڑی (بیورورپورٹ،نمائندہ خصوصی) کرمنلز ڈویژن کے جسٹس (بقیہ نمبر18صفحہ6پر)

محمد قذافی بن ذائر نے ڈی ایس پی مظہر ہراج کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے تفصیلات کے مطابق موجودہ ڈی ایس پی مظہر ہراج جب بطور ایس ایچ او تھانہ لڈن وہاڑی تعینات تھا تو اس وقت کا مشہور مقدمہ ظہوراں بی بی تشدد کیس جس کا نوٹس وزیر اعلیٰ اور وزیراعظم پاکستان نے لیا تھا جس پر آر پی او ملتان وسیم سیال نے تھانہ لڈن آ کر اس وقت کے ڈی ایس پی راؤ طارق پرویز اور ایس ایچ او لڈن و دیگران کے خلاف مقدمہ درج کر کے ان کو تھانہ لڈن حوالات میں بند کر دیا تھا۔بعدازاں معاملہ ٹھنڈا ہونے پر ایس ایچ او مظہر ہراج نے مقدمہ کے ملزمان سے مفاد لیتے ہوئے ملزمان مقدمہ ایاز دولتانہ وغیرہ کو فائدہ پہنچانے کی خاطر جو رپورٹ عدالت میں جمع کروائی اس میں مس کنڈکٹ کرتے ہوئے جھوٹی رپورٹ بنائی کہ ملزمان کی ضمانت عدالت عالیہ سے منظور ہو چکی ہے جس پر مقدمہ کی مدعیہ ظہوراں بی بی نے عدالت میں بتایا کہ رپورٹ جھوٹی ہے عدالت عالیہ سے ملزمان کی ضمانت نہ ہوئی ہے۔ جس پر جج کریمینل ڈویژن وہاڑی محمد قذافی بن زائر نے ڈی پی او وہاڑی کو مؤرخہ 6جولائج کو حکم دیا کہ ڈی ایس پی مظہر ہراج کے خلاف پولیس آرڈر 2002 کے تحت 155 سی کا مقدمہ درج کر کے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

مظہرہراج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -