شہباز شریف کاحکومت کیخلاف جارحانہ سیاست اپنانے کافیصلہ، پارٹی کے صوبائی عہدیداروں کو متحرک ہونے کی ہدایت

    شہباز شریف کاحکومت کیخلاف جارحانہ سیاست اپنانے کافیصلہ، پارٹی کے ...

  

 لاہور ( جنرل رپورٹر) مسلم لیگ(ن) کے صدر شہباز شریف نے بھی مصالحت کی بجائے جارحانہ انداز اپنانے کا فیصلہ کر لیا۔ ن لیگ کے صدر نے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے جارحانہ حکمت عملی تیار کر لی۔مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے چاروں صوبائی صدور اور عہدیداروں کو حکومت کے خلاف متحرک ہونے کی ہدایات دے دی ہیں۔ ذرائع ن لیگ کے مطابق شہباز شریف نے منتخب لیگی نمائندوں کو پارلیمنٹ اور دیگر اسمبلیوں میں حکومت کے خلاف جارحانہ انداز اپنانے کی ہدایت کر دی ہے۔ لیگی ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کے صدر نے پارٹی کو ہدایات دی ہیں کہ لوڈ شیڈنگ، مہنگائی اور حکومت کی ناکام پالیسیوں کو ہدف تنقید بنائیں۔ حکومت کی جانب سے اپوزیشن رہنماؤں پر احتساب کے نام پر سیاسی انتقام کو بھی ہدف تنقید بنایا جائے، شہباز شریف نے اپنی ہدایات میں کہا کہ پارٹی سطح پر عید کے بعد ورکرز کنونشن اور کارنر میٹنگز کا انعقاد کیا جائے۔ لوڈ شیڈنگ، مہنگائی اور دیگر عوامی ایشوز پر حکومت کے خلاف ہونے والے اجتجاج میں بھرپور شرکت کی جائے اور عوامی احتجاج میں بتایا جائے کی کس طرح ن لیگ نے ملک سے اندھیرے دور کئیے۔ن لیگ کے صدر نے منتخب لیگی ارکان کو ہفتے میں کم از کم دو دن اپنے حلقوں میں موجود رہنے کی بھی ہدایت دی ہے۔ لیگی ذرائع کے مطابق عید کے بعد مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف چاروں صوبوں کا دورہ بھی کریں گے۔دوسری طرف شہبازشریف نے یوم شہدائے کشمیر پر اپنے بیان میں شہدائے کشمیر کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ 13 جولائی 1931 کو 21کشمیریوں کو گولیاں برسا کر بے رحمی سے شہید کیاگیا اوردرجنوں کو زخمی کیاگیا،سری نگر سینٹرل جیل کے صحن میں یہ قتل عام ہوا، ان کشمیریوں کا جرم آزادی اور اسلام سے محبت تھی۔ انہوں نے کہا کہ عبدالقدیر کی قرآن کے احترام اور عزت، آزادی کے حق کے لئے اور جبر کی غلامی کے خلاف تقریر جرم قرار پائی،اہل کشمیر کی حریت آزادی کا یہ سلسلہ اور قربانیاں آج بھی اسی جذبے سے جاری ہیں،اہل کشمیر نسل درنسل اپنے حقوق اور آزادی کے لئے بے مثال صبرواستقلال اور بہادری سے آگے بڑھ رہے ہیں،ہم شہدائے کشمیر کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔

شہباز شریف

مزید :

صفحہ اول -