انگلینڈ کے خلاف گزشتہ میچز والا جوش برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے: اظہر محمود

انگلینڈ کے خلاف گزشتہ میچز والا جوش برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے: اظہر محمود
انگلینڈ کے خلاف گزشتہ میچز والا جوش برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے: اظہر محمود

  


کارڈف (ڈیلی پاکستان آن لائن) قومی کرکٹ ٹیم کے بالنگ کوچ اظہر محمود کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کے خلاف سیمی فائنل میچ میں گزشتہ 2 میچز والا مائنڈ سیٹ، ڈسپلن اور جوش و جذبہ برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے، ہمارے پاس 90 کی دہائی کی طرح کے سپر سٹارز نہیں ہیں بلکہ یہی لڑکے ہیں جن پر محنت کرکے انہیں پلیئر بنانا ہے۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اظہر محمود کا کہنا تھابعض اوقات یہ ہوتا ہے کہ آپ بولر اور کبھی کبھار بلے باز کو میچ جیتنے کا کریڈٹ دے رہے ہوتے ہیں ، ہمارا مسئلہ یہ ہے کہ اچھی پرفارمنس پر ایک لڑکے کو فوری طور پر ہیرو اور ایک میچ میں خراب پرفارم کرنے پر اسی لڑکے کو زیرو بنادیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم پچھلے پانچ چھ مہینے سے کام کر رہے ہیں لیکن اس دوران تیکنیک پر کام کرنے کا صرف ایک ہفتے کا وقت ملا تھا ۔ آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی میں لگاتار میچز ہو رہے ہیں اس لیے لڑکوں کی تیکنیک پر کام نہیں کیا جا سکتا بلکہ صرف چھوٹی موٹی خامیوں پر ہی قابو پایا جا سکتا ہے۔بطور کوچ میں نے لڑکوں کو بتایا ہے کہ نئے بال سے لینتھ کیا رکھنی ہے ، جنید کا تکنیکی مسئلہ تھا لیکن اب وہ واپس 140 کی پیس پر آگئے ہیں، وہاب ریاض بھی ایک جگہ پر ٹیک آف نہیں کرتا تھا لیکن اب اس میں بہتری آ رہی ہے۔ہمارے پاس کوئی جادو کی چھڑی نہیں ہے جسے ہلانے سے تمام مسائل حل ہو جائیں گے ، میرے پاس ساری چیزیں موجود ہیں ٹورنامنٹ کے بعد یہ بتاﺅں گا کہ ہم پہلے کہاں تھے اور کہاں پہنچ گئے۔

اظہر محمود نے کہا لوگوں سے درخواست ہے کہ یہ لڑکے ہی ہمارے ہیروز ہیں ، بورڈ کے پیچھے بیٹھے لوگوں کو کہنا چاہوں گا کہ 300 رنز بنانا معمول کی بات ہے لیکن ہمارے لڑکوں نے اکثر ٹیموں کو اس سے کم رنز پر روکا ہے۔ ہمارے پاس 90 کی دہائی والی لگژری نہیں ہے کہ ہمارے پاس وسیم اکرم، وقار یونس اور شعیب اختر جیسے سپر سٹارز موجود ہوں بلکہ ہمارے پاس یہی لڑکے ہیں جن پر محنت کرکے انہیں پلیئر بنانا ہے۔

انگلینڈ کے خلاف کھیلے جانے والے سیمی فائنل میچ کی حکمت عملی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے بولنگ کوچ اظہر محمود کا کہنا تھا کہ ہر میچ ہی اہم ہوتا ہے اور انگلینڈ کے خلاف میچ بھی اسی طرح اہم ہے، اسی کارڈف کے گراﺅنڈ میں گزشتہ سال ہم نے 300 رنز کا تعاقب کرکے انگلینڈ کو ہرایا تھا۔ ہم اس ٹورنامنٹ میں آٹھویں نمبر پر آئے تھے لیکن لڑکوں نے محنت کی اور سیمی فائنل میں پہنچ گئے۔ انگلینڈ کے خلاف سیمی فائنل میچ میں جنوبی افریقہ اور سری لنکاکے خلاف رکھا جانے والا مائنڈ سیٹ، ڈسپلن اور جوش و جذبہ برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے۔

مزید : کھیل


loading...