حکومت بچوں کے تحفظ کیلئے فوری نئی قانون سازی کرے، سلمیٰ ثمین

حکومت بچوں کے تحفظ کیلئے فوری نئی قانون سازی کرے، سلمیٰ ثمین

لاہور(لیڈی رپورٹر ) آل پاکستان گجر خواتین ایسوسی ایشن کی جنرل سیکرٹری سلمیٰ ثمین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بچوں کے تحفظ کیلئے فوری طورپر نئی قانون سازی کی جائے اورچائلڈلیبرکا خاتمہ یقینی بناکربچوں کومفت تعلیم کے زیورسے آراستہ کیا جائے

۔گزشتہ روزمقامی ہوٹل میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بچوں کوصحت ،تعلیم اورتحفظ فراہم کرنا ریاست کی بنیادی ذمہ داری ہے لیکن حکومت اپنی اہم اس ترین ذمہ داری سے غافل ہے ، بچے پاکستان کا مستقبل ہیں غربت کے باعث ایک کروڑسے زائد بچے محنت مزدوری کرنے پرمجبورہیں ۔

اورجنسی تشدد سمیت دیگربے شمارمسائل کا شکارہے ملک کے مستقبل کومحفوظ بنانے کیلئے حکومت اورمعاشرے کے تمام طبقات کوملکربچوں پرہونے والے جنسی تشددجبکہ بچیوں کی کم عمری اورجبری شادیوں کی روک تھام کیلئے جہاد کرنا ہوگا ۔انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ بچوں کوان کے بنیادی حقوق سے متعلق آگاہی دینے کیلئے بچوں کے حقوق سے متعلق مضامین کوسیکنڈری نصاب کا حصہ بنایا جائے اور بچوں کے حقوق کا تحفظ یقینی بنانے کیلئے ’’چائلڈ رائٹس کمیشن ‘‘بنایاجائے۔انہوں نے کہا کہ حکومت لاوارث ،یتیم اور غریب بچوں کو ایجوکیشن سمیت صحت کی بہترین سہولیات اور مناسب ماحول فراہم کرے تا کہ بے سہارا ،غریب،یتیم اور غریب بچے معاشرے کے مفید شہری بن سکیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...