کاغذ کی قیمت میں مصنوعی اضافہ واپس نہ لیا تو احتجاجی تحریک چلائیں گے، خالد پرویز

کاغذ کی قیمت میں مصنوعی اضافہ واپس نہ لیا تو احتجاجی تحریک چلائیں گے، خالد ...

لاہور (کامرس رپورٹر)آل پاکستان انجمن تاجرن نے لو کل پیپر ملز مافیا کی جانب سے کاغذ رم کی قیمت میں 400روپے اضافہ پر تشو یش کا اظہار کر تے ہوئے عندیہ دیا ہے کہ اگر کاغذ کی قیمت میں کیا جانے والا مصنوعی اضافہ واپس نہ لیا تو احتجاجی تحریک کا آغاز کر دیا جائے گا ۔گزشتہ روزصدر آل پاکستان انجمن تاجران خالد پرویز نے کاپی مینو فیکچرز اور پیپر ٹریڈرز کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ لوکل پیپر ملز نے کارٹل بنا کر منافع خوری کے لیے کاغذ کے ریٹس میں ظالمانہ اور ناجائز اضافہ کیا ہے ۔ نہ بجلی کے ریٹس بڑھے ہیں نہ کیمیکلز اور ردی مہنگی ہوئی ہے اور نہ کوئی نیا ٹیکس لگا ہے ۔ مگر پیپر ملز نے کاغذ کے ریٹ آسمان تک پہنچا دیے ہیں ۔ فی رِم 400روپے تک بلا جواز اضافہ ہو چکا ہے اسے فوراً واپس لیا جائے ۔ ورنہ تین بعد احتجاجی تحریک شروع کر دی جائے گی ۔ جس کے پہلے مرحلے میں کاغذ کی خریداری بند اور اُردو بازار میں سیاہ پرچم لہرائے جائیں گے ۔

تاجر سیاہ پٹیاں باندھیں گے ۔ خالد پرویز نے کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ ٹیکسٹ بُکس کے لیے ڈیوٹی فری کاغذ منگوائے ۔ اس سے جہاں لوکل پیپر ملز کی مناپلی ختم ہوگی وہاں اعلیٰ کوالٹی کے کاغذ پر طباعت سے درسی کتب پائیدار بھی بنیں گی اور اسی طرح قرآنِ پا ک کے لیے استعمال ہونے والے مخصوص سائز اور گرام کے امپورٹڈ پیپر پر ڈیوٹی ختم کی جائے تاکہ لوکل پیپر ملز پر انحصار کم ہو اور ان کا وحشیانہ لوٹ مار کا سلسلہ بند ہوسکے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...