سوئٹزرلینڈ کے خوبصورت ترین گاؤں کی تصاویر بنانے پر پابندی

سوئٹزرلینڈ کے خوبصورت ترین گاؤں کی تصاویر بنانے پر پابندی
سوئٹزرلینڈ کے خوبصورت ترین گاؤں کی تصاویر بنانے پر پابندی

  


سوئٹزرلینڈ (مانیٹرنگ ڈیسک)سوئٹزرلینڈ میں ایک ایسا گاؤں بھی ہے جس کی خوبصورتی کی وجہ سے وہاں سیاحوں کے تصاویر بنانے پر پابندی عائد کردی گئی۔ویسے تو سوئٹزرلینڈ کا نام آتے ہی ذہن میں سبزے سے اٹے ہوئے بلند و بالا پہاڑ اور نیلے رنگ کے بہتے پانی کی جھلک ذہن میں آتی ہے اور دل یہی چاہتا ہے کہ کاش ایک مرتبہ سوئٹزرلینڈ کو حقیقی آنکھوں سے ضرور دیکھا جائے، شاید یہی وجہ ہے کہ سوئٹزرلینڈ کی مقامی انتظامیہ نے قدرت کے کرشموں سے بھرپور ایک گاؤں کی تصاویر بنانے پر پابندی لگادی ہے۔سوئٹزرلینڈ کے چھوٹے سے گاؤں برگن کو یورپ کا سب سے حسین مقام قرار دیا جاتا ہے جس کی خوبصورتی دیکھنے کے لئے وہاں ہر وقت سیاحوں کا تانتا بندھا رہتا ہے اور حال ہی میں گاؤں کے حسین نظاروں کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں جس پر لوگوں نے مختلف رائے دیں اور زیادہ تر لوگوں نے وہاں نہ جانے پر اپنے آپ کو کوسا اور مایوسی کا اظہار کیا جب کہ بعض نے حسد کا اظہار کیا۔برگن گاؤں کی انتظامیہ کو جب معلوم ہوا کہ لوگ سوشل میڈیا پر گاؤں کی تصاویر دیکھ کر خود کو کوس رہے ہیں اس وجہ سے انہوں نے گاؤں کے حسین مناظر کی تصاویر بنانے پر پابندی لگاتے ہوئے اس کے لئے نیا قانون بھی پاس کرالیا ہے۔گاؤں کی کونسل نے سیاحوں کے تصاویر بنانے پر پابندی کے لئے قانونی دستاویز کی منظوری دی جسے بعدازاں میئر کے پاس منظوری کے لئے پیش کیا گیا جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ گاؤں کی خوبصورت تصاویر کو دیکھ کر لوگ سوشل میڈیا پر حسد میں مبتلا ہورہے ہیں اس لئے تصاویر بنانے پر پابندی ہونی چاہیئے۔

میئر نے گاؤں کی کونسل کی دستاویز منظور کرتے ہوئے برگن میں سیاحوں کے تصاویر بنانے پر پابندی عائد کردی اور ساتھ ہی نئے قانون کی خلاف ورزی کرنے والے سیاح کو 5 یورو جرمانہ بھی ادا کرنا ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...