گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کومستقل نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر فیصلہ محفوظ

گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کومستقل نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر فیصلہ ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہورہائیکورٹ نے گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کومستقل نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا۔جسٹس شجاعت علی خان نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزاروں کے وکیل ملک اویس خالد نے موقف اختیار کیا کہ عدالت عالیہ نے گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کو نوکریوں سے برطرف کرنے کے معاملہ پر حکم امتناعی جاری کر رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عدالت نے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے سے متعلق جائزہ لینے کی بھی ہدایت کی ہے مگر اس پر عمل نہیں کیا جا رہا۔انہوں نے بتایا کہ گورنر ہاوس کا انفارمیشن ٹیکنالوجی کا منصوبہ مستقل بنیادوں پر قائم کر دیا گیا ہے مگر اس منصوبے پر کام کرنے والے گریڈ 12اور 17کے ملازمین کو مستقل نہیں کیا جا رہا۔گورنر پنجاب کے پرنپسل سیکرٹری کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ کنٹریکٹ ملازمین کو آئی ٹی منصوبے کے لئے کنٹریکٹ پر رکھا گیا تھاتاہم منصوبہ کی تکمیل کی بنا پر اب ملازمین کی ضرورت باقی نہیں رہی ،انہیں مستقل نہیں کیا جا سکتاجس پرعدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیاہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...