لاہور ہائی کورٹ کے دورکنی بنچ نے دوہرے قتل کے ملزم کو بری کردیا

لاہور ہائی کورٹ کے دورکنی بنچ نے دوہرے قتل کے ملزم کو بری کردیا

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس محمد انوارالحق کی سربراہی میں قائم دورکنی بنچ نے دوہرے قتل کے ملزم کو بری کردیا۔ ضلع ننکانہ کے کرامت علی کو ماتحت عدالت نے کوثر بی بی اور امانت علی کے قتل کے مقدمہ میں سزائے موت کا حکم سنایا تھا جس کے خلاف اس نے یہ اپیل دائر کی تھی جو عدالت عالیہ نے منظو کرلی ۔اپیل کنندہ کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ تھانہ بڑا گھر ضلع ننکانہ صاحب نے8 جون 2013ء کو ثریا بی بی اورامانت علی کے قتل کا مقدمہ درج کیاگیاجس میں 3ملزمان کرامت علی،نیامت علی اور سرداراں بی بی کو نامزدکیا گیا۔وکیل صفائی کا کہناتھا کہ اندھیرے میں ملزمان کی صحیح شناخت ممکن نہ ہونے،چشم دید گواہوں کی موقع پرموجودگی ثابت نہ ہونے اورمیڈیکل رپورٹ میں بھی تضاد پائے جانے باعث ایڈیشنل سیشن جج نے 2ملزمان نیامت علی اور سرداراں کو بری جبکہ کرامت علی کو سزائے موت کا حکم سنایا تھا۔عدالت میں سرکاری وکیل نے بریت اپیل کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ پولیس تفتیش،میڈیکل رپورٹس اورگواہوں کے بیانات کے مطابق ملزمان قصوروارہے تاہم عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد ناکافی شواہد پر اپیل کنندہ کرامت علی کوبری کرنے کاحکم دے دیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...