جمشید دستی کی کارسرکار میں مداخلت کے مقدمہ میں ضمانت بعدازگرفتاری منظور

جمشید دستی کی کارسرکار میں مداخلت کے مقدمہ میں ضمانت بعدازگرفتاری منظور

مظفرگڑھ (نامہ نگار)علاقہ مجسٹریٹ مظفرگڑھ نعیم بخش نے تھانہ سٹی مظفرگڑھ میں درج کار سرکار میں مداخلت اور ایک شخص کومبینہ زخمی کرنے کے مقدمہ میں پاکستان عوامی راج پارٹی کے (بقیہ نمبر33صفحہ12پر )

چیئر مین و رکن قومی اسمبلی جمشید احمد دستی کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری منظور کر لی ۔جبکہ قتل کے مقدمہ میں اعانت جرم کے حوالے سے درخواست ضمانت کی سماعت ایڈشنل سیشن جج مظفرگڑھ محمد ارشد انجم آج بدھ کے روز کریں گے ۔دریں اثناء پولیس منگل کے روز بھی رکن قومی اسمبلی جمشید احمد دستی کو انسداد دہشت گردی ڈیرہ غازی خان کی عدالت میں پیش نہیں کیا ۔پولیس ذرائع کے مطابق پولیس نے امن وعامہ کے خطرہ کے پیش نذر جمشید احمد دستی کو عدالت میں پیش کرنے کی بجائے ان کا 7ATAمیں ریمانڈ سینٹرل جیل ڈیرہ غازی خان میں ہی کیا جائے گا ۔جبکہ منگل کے روز بھی جمشید احمد دستی کے وکلاء پارٹی رہنما اور کارکنان عدالت کے باہر منتظر رہے ۔دریں اثنا وکلاء نے ڈیرہ غازی خان جیل میں جمشید دستی کے وکالت نامہ پر دستخط حاصل کر لیے ہیں ۔پاکستان عوامی راج ضلع ملتان کے صدر میاں مظہر عباس کے اعلامیہ کے مطابق ایم این اے جمشید احمد دستی کی رہائی کے سلسلہ میں 16جون کو صبح 8بجے نادرآباد پھاٹک شیر شاہ روڈ ملتان اور احتجاجی جلسہ اور دھرنا دیا جائے گا ۔جس سے پارٹی کے مرکزی رہنما رانا محبوب اختر ،رانا امجد علی امجد ایڈ ووکیٹ ،جام محمد یونس ایڈ ووکیٹ محمد خان مروت ،صابر عطاء تھہیم ،عامر سلطان گورایا ،چوہدری عامر کرامت سمیت مقامی رہنما خطاب کریں گے ۔

جمشید دستی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...