ن لیگی قیادت قانون کی حکمرانی پرمکمل یقین رکھتی ہے،برجیس طاہر

ن لیگی قیادت قانون کی حکمرانی پرمکمل یقین رکھتی ہے،برجیس طاہر

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیر برائے اُمور کشمیر و گلگت بلتستان چوہدری محمدبرجیس طاہر نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) اور اس کی قیادت ملک میں قانون کی حکمرانی پر مکمل یقین رکھتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ پانامہ لیکس کیس کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ کی جانب سے بنائی گئی جے آئی ٹی میں پہلے محمدنوازشریف کے دونوں صاحبزادے پیش ہو چکے ہیں اور اب وزیراعظم بذات خود جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہو کر ملک میں قانون کی پاسداری کے ضمن میں ایک نئی تاریخ رقم کرنے جارہے ہیں جس سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ پاکستان میں قانون کی مکمل حکمرانی موجود ہے اور تمام اہم ادارے اپنے دائرہ کار میں مکمل آزاد ہیں۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ مسلم لیگ(ن) اور اس کی قیادت نے ماضی میں بھی عدالتوں سے بھرپور تعاون کیا ہے اوراس مرتبہ بھی باوجود اس کے کہ جے آی ٹی کے چند ممبران کے بارے مسلم لیگ ن نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا ، مسلم لیگ (ن)کی قیادت جے آی ٹی سے مکمل تعاون کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ جب پانامہ پیپرز منظر عام پر آئے اور مخالفین نے وزیراعظم اور اُن کے خاندان پر جھوٹے الزامات لگانے شروع کیے تب بھی وزیر اعظم نے اسمبلی کے فلور پر پانامہ پیپرزکے ضمن میں لگائے گئے جھوٹے الزامات کی تحقیقات کے لیے عدالتی کمیشن بنانے کی بات کی۔ انہوں نے کہاکہ درحقیقت مخالفین پانامہ لیکس کی تحقیقات سے زیادہ اس کیس کی آڑ میں سیاست کرنے میں دلچسپی رکھتی ہے جس طرح کہ انہوں نے ڈان لیکس اور دیگر ہر موقع پر ملکی مفادات کو بالاے طاق رکھتے ہوے یہ کوشش کی کہ کسی نہ کسی طرح پاکستان کے عوام کو گمراہ کرکے کوئی سیاسی فائدہ اٹھایا جاسکے جس کے لیے انہوں نے آج کل ہر کرپٹ سیاست دان کو بھی اپنی جماعت کا حصہ بنانے کا عمل شروع کررکھا ہے۔اُنہوں نے کہاکہ تحریک انصاف اور اس کے قائد عمران خان کی شروع دن سے یہ کوشش رہی ہے کہ کسی نہ کسی طرح ملک میں جمہوری حکومت کا خاتمہ کرکے اقتدار کے ایوانوں تک رسائی حاصل کریں اور ان مقاصد کے حصول کے لیے انہوں نے دھرنوں اور اسلام آباد کو لاک ڈاون کرنے جیسے ہتھکنڈوں کا بھرپور سہارا لیا جس کو عوام نے ہر مرتبہ ناکامی سے دوچارکردیا۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف و دیگر مخالفین نے اپنے مفادات کی خاطر حسین نواز کی تصویر لیک کو بھی حکومت کی سازش قرار دیا، اب جب کہ تصویر لیک کے بارے اصل حقائق عوام کے سامنے آچکے ہیں تو تحریک انصاف کو اپنے طرز عمل پر معافی کا طلب گار ہونا چاہے، انہوں نے کہا کہ اسی طرح تحریک انصاف نہال ہاشمی کے استعفے اور مسلم لیگ ن سے بددخلی کو بھی ڈراما قرار دے رہے ہیں جو کہ مخالفین کی منفی اور سازشی زہنیت کی عکاسی کرتا ہے ۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ عمران خان اور ان کی جماعت تحریک انصاف کو اس حقیقت کا علم ہونا چاہے کہ پاکستان کے عوام سیاسی لحاظ سے انتہائی باشعور ہو چکے ہیں اور وہ کارکردگی کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں نہ کہ الزام تراشی کی سیاست پر اور اس کا واضح ثبوت عوام کی جانب سے مسلم لیگ(ن) پر متعدد ضمنی انتخابات آزادکشمیر وگلگت بلتستان کے انتخابات میں بھرپور اعتماد کی صورت میں آچکا ہے جہاں اُنہوں نے جھوٹے الزامات لگانے والوں کو یکسر مسترد کرتے ہوئے مسلم لیگ(ن) کو بھرپور کامیابی سے ہمکنار کیا۔ چوہدری محمدبرجیس طاہر نے کہا کہ وزیراعظم اور اُن کے خاندان نے جے آئی ٹی سے مکمل تعاون کا اپنا وعدہ پورا کر دیا ہے اور آگے بھی ہر قسم کی تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے اُنہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور اُن کے خاندان پر پانامہ لیکس کی پاداش میں لگائے گئے تمام الزامات غلط ثابت ہوں گے اور وزیراعظم محمدنواز شریف اپنے اُس وژن کی تکمیل کریں گے جس کے تحت وہ ملک میں تعمیر وترقی کا ایک تاریخی دور شروع کیے ہوئے ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...