نقیب اللہ قتل کیس :عدالت کی مقتول کے وکلا کو دلائل کے لئے آخری مہلت

نقیب اللہ قتل کیس :عدالت کی مقتول کے وکلا کو دلائل کے لئے آخری مہلت

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)نقیب اللہ قتل کیس میں سابق ایس ایس پی ملیرراؤانوارکی درخواست ضمانت پر سماعت کرتے ہوئے عدالت نے مقتول کے وکلا کو دلائل کے لئے آخری مہلت دے دی جبکہ کیس کی سماعت 4 جولائی تک ملتوی کر دی۔

تفصیلات کے مطابق نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت انسداد دہشتگردی عدالت میں ہوئی جس میں سابق ایس ایس پی ملیرراؤانوارکی درخواست ضمانت پر بھی سماعت ہوئی۔انسداد دہشتگردی عدالت نے مقتول کے وکلا کو دلائل کے لئے آخری مہلت دے دی۔عدالت نے نقیب اللہ کے والد کے وکلا کی غیرحاضری پرسماعت 4 جولائی تک ملتوی کر دی۔

اے ٹی سی میں صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے سابق ایس ایس پی ملیر راؤانوار کا کہنا تھا کہ مجھے غلط مقدمے میں نامزد کیا گیا ہے،میرے سر کی قیمت 50 لاکھ روپے مقرر کرنیوالے شخص کو گرفتار کیا گیا جبکہ مجھ پر دو خود کش حملے ہو چکے ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ جے آئی ٹی میں جوفون نمبرڈالاگیا اس کی لوکیشن کراچی تھی جبکہ میں 21مارچ کو سپریم کورٹ اسلام آباد میں تھا،وہ فون نمبر ڈالا گیا ہے جو میرے استعمال میں ہی نہیں،جے آئی ٹی میں میرا فون نمبر بھی غلط ڈالا گیا ہے۔سابق ایس ایس پی ملیر کا مزید کہنا تھا کہ دھمکی آمیز خط سے متعلق وفاق، صوبائی حکومت اور آئی جی سندھ کو آگاہ کیاتھا،پیشہ ورانہ رقابت کی وجہ سے میرے خلاف کارروائی کرائی گئی،میں نے نقیب اللہ کو پکڑوایا اور نہ مارا،ریکارڈ موجود ہے،نقیب اللہ قتل کیس میں بے قصور ثابت ہوں گا۔

مزید : قومی /جرم و انصاف /علاقائی /سندھ /کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...