شادی کی تقریب میں وفاقی وزیر فواد چوہدری نے صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ دے مارا

شادی کی تقریب میں وفاقی وزیر فواد چوہدری نے صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ دے ...
شادی کی تقریب میں وفاقی وزیر فواد چوہدری نے صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ دے مارا

  


فیصل آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سوشل میڈیا پر وائرل خبر کے مطابق وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے ایک شادی کی تقریب کے دوران سینئر صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ مار دیا۔ پنجاب یونین آف جرنلسٹ کے صدر اور معروف صحافی شہزاد حسین بٹ نے بھی فواد چوہدری کی جانب سے سمیع ابراہیم کو تھپڑ مارے جانے کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاقی وزیر فواد چوہدری کو اس غنڈہ گردی اور سینئر صحافی کے ساتھ کی جانے والی دہشت گردی کے نتائج بھگتنا ہوں گے،غیرت مند صحافی بے لگام وزیر کو اس شرمناک سانحے پر ناکوں چنے چبوا دیں گے ،پوری صحافتی کمیونٹی سمیع ابراہیم کے ساتھ کھڑی ہے،وزیر اعظم فواد چوہدری کو فوری بر طرف کریں ۔

سینئر صحافی و اینکر پرسن نصر اللہ ملک نے اپنے ایک ٹویٹ میں فواد چوہدری کی جانب سے سمیع ابراہیم کو تھپڑ مارے جانے کی خبر دی ہے۔نصراللہ ملک کا ٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا ’’ اطلاعات ہیں کہ وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے ایک تقریب کے دوران سینئر صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ رسید کردیا۔ پچھلے کئی روز سے سوشل میڈیا پر دونوں کے مابین لفظی جنگ چل رہی تھی‘۔

ٹوئٹر@NasrullahMalik1

سوشل میڈیا پر چلنے والی خبروں کے مطابق فواد چوہدری اور سینئر صحافی سمیع ابراہیم سمیت ملک کی اہم شخصیات فیصل آباد میں نجی ٹی وی چینل’’ 92 نیوز‘‘ کے مالک میاں حنیف کی صاحبزادی کی شادی کی تقریب میں شریک تھے جہاں دونوں میں تلخ کلامی ہوئی اور بات اس حد تک بڑھ گئی کہ وفاقی وزیر نے سینئر صحافی کو تھپڑ مار دیا۔ واقعہ پیش آنے پر شادی کی تقریب میں موجود لوگ اکٹھے ہوگئے، اس موقع پر وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سینئر صحافی سے معذرت بھی کی۔

سینئر صحافی اور لاہور پریس کلب کے سابق سیکرٹری عبدالمجید ساجد نے فواد چوہدری اور شادی کی تقریب میں موجود ان صحافی قائدین کے رویے کی مذمت کی جنہوں نے وفاقی وزیر کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا۔ ’سناہے کہ فیصل آباد میں 92 نیوز کے مالک میاں حنیف کی بیٹی کی شادی کے موقع پر وفاقی وزیر نے صحافی سمیع ابراہیم کو تھپڑ مارا ہے مگر افسوس یہ ہے کہ وہاں موجود نام نہادصحافی قائدین تماشا دیکھتے رہے‘۔

ٹوئٹر@AMajeedSajid 

صدر پنجاب یونین آف جرنلسٹس ا شہزاد حسین بٹ نے فواد چوہدری کی جانب سے سینئر صحافی کو تھپڑ مارے جانے کے واقعے کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کی ہے ۔ شہزاد حسین بٹ نے  کہا ہے کہ وفاقی وزیر فواد چوہدری کو اس غنڈہ گردی اور سینئر صحافی کے ساتھ کی جانے والی دہشت گردی کے نتائج بھگتنا ہوں گے،غیرت مند صحافی بے لگام وزیر کو اس شرمناک سانحے پر ناکوں چنے چبوا دیں گے ،پوری صحافتی کمیونٹی سمیع ابراہیم کے ساتھ کھڑی ہے،وزیر اعظم فواد چوہدری کو فوری بر طرف کریں ۔ انہوں نے  کہا کہ فواد چوہدری کا بطور وزیر اطلاعات بھی صحافیوں کے ساتھ رویہ انتہائی توہین آمیز تھا اور وزارت میں تبدیلی کے بعد بھی ان کے غرور و تکبر میں کوئی کمی نہیں آئی، وزیر اعظم عمران خان فی الفور فواد چوہدری کو کابینہ سے برطرف کریں بصورت دیگر تمام صحافتی تنظیمیں حکومت کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گی۔

پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم کے سرگرام کارکن ڈاکٹر فرحان ورک نے بھی اس واقعے کی تصدیق کی ہے۔ ’ہمیں ذرائع سے اطلاعات موصول ہو رہی ہیں کہ فواد چودھری نے فیصل آباد میں شادی کی تقریب کے دوران سمیع ابراہیم کو تھپڑ مار دیا‘۔

ٹوئٹر@FarhanKVirk

پی ٹی آئی کے ایک اور کارکن سید فیاض علی نے واقعے کے بعد کی ایک تصویر ٹوئٹر پر شیئر کی ہے جس میں سمیع ابراہیم کو معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان کے ساتھ بیٹھے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

ٹوئٹر@FayyazShots

خیال رہے کہ فواد چوہدری اور سمیع ابراہیم میں گزشتہ کچھ روز سے لفظی جنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ سمیع ابراہیم نے ایک ویڈیو پیغام میں دعویٰ کیا تھا کہ فواد چوہدری حکومت کے خلاف بیرونی سازش کا حصہ ہیں۔ سمیع ابراہیم کے اس الزام پر فواد چوہدری نے کہا تھا کہ صحافی نے ان سے وزارت اطلاعات کے دنوں میں 2 کروڑ روپے کے اشتہارات مانگے تھے جس سے انکار پر وہ ان کے خلاف مہم چلا رہے ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /فیصل آباد /Breaking News /اہم خبریں