افغان حکومت کا غیر ملکی فوجی انخلاء رکوانے کیلئے امریکہ سے قطر معاہدہ پر نظر ثانی کا مطالبہ

  افغان حکومت کا غیر ملکی فوجی انخلاء رکوانے کیلئے امریکہ سے قطر معاہدہ پر ...

  

اسلا م آباد(آن لائن)افغان حکومت ملک سے غیر ملکی فوجی انخلا رکوانے کیلئے سرگرم ہو گئی۔اسلام آباد کے اہم سفارتی ذرائع کے مطابق افغان حکو مت نے قطر معاہدے پر نظر ثانی کیلئے امریکہ سے درخواست کی ہے۔قطر معاہدے کے تحت ہی افغان حکومت اور طالبان کے درمیان حتمی مذاکرات کی تیاری بھی جاری ہے۔ ا فغا ن حکومت اور طالبان کے در میا ن آئندہ مذاکرات قطر میں کرنے پر بڑی حد تک اتفاق بھی ہو چکا ہے۔ پاکستان نے ان مذاکرات کیلئے طالبان کو راضی کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ سفارتی ذرائع کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا حالیہ دور کابل اسی سلسلے کی کڑی ہے۔ افغانستان کیلئے امریکی نمائندہ زلمے خلیل زاد کی رواں ہفتے اسلام آباد اور بعد ازاں قطر میں مصرو فیا ت بھی افغان حکومت اور طالبان کے متوقع مذاکرات کے مستقبل کیلئے اہم قرار دی جا رہی ہیں۔ قطر میں زلمے خلیل زاد نے مذاکرات کے مستقبل سے متعلق طالبان لیڈروں سے بھی اہم بات چیت کی ہے۔ ذرائع کا کہناہے اگر امریکہ نے فوجی انخلا پر نظر ثانی سے متعلق افغان حکومت کی درخواست پر سنجیدگی سے غور کیا تو افغان حکومت کیساتھ طالبان کے متوقع مذاکر ات کھٹائی میں پڑ سکتے ہیں۔ افغانستان کیلئے امریکی نمائندہ زلمے خلیل زاد کی قطر سے واپسی پر افغانستان سے غیر ملکی افواج کی واپسی سے متعلق امریکہ طالبان معاہدے کے مستقبل کا تعین کیا جائے گا۔ افغانستان سے فوجی انخلا روکنے کیلئے امریکہ خطے میں داعش کی مبینہ موجودگی کو جواز بنا سکتا ہے۔ افغانستان سے فوجی انخلا پر نظر ثانی کیلئے امریکہ رہا ہونیوالے طالبان قیدیوں کی شناخت کے طریقہ کار پر بھی سوال اٹھا سکتا ہے۔ سفارتی ذرائع کا کہناہے رہا ہونیوالے قیدیوں کے آئندہ پرامن رہنے کے بارے میں طالبان سے امریکہ آنیو ا لے دنوں میں ٹھوس یقین دہانیوں کی بات بھی کر سکتا ہے۔یاد رہے افغانستان سے غیر ملکی فوجی انخلا کا معاہدہ گزشتہ سال فروری میں قطر میں طالبان اور ا مر یکہ کے درمیان ہوا تھا۔ معاہدے کے تحت امریکہ کو چودہ ماہ کے اندر غیر ملکی فوجی افغانستان سے نکالنے کا پابند کیا گیا تھا۔

افغان حکومت

مزید :

صفحہ آخر -