پنجاب میں کورونا کے بعد ٹائیفائیڈ بے قابو،10روز میں 20ہزار سے زائد کیس رپورٹ

  پنجاب میں کورونا کے بعد ٹائیفائیڈ بے قابو،10روز میں 20ہزار سے زائد کیس رپورٹ

  

لاہور(آئی این پی)پنجاب میں کورونا وائرس کے بعد ٹائیفائیڈ بخار کی وبا بے قابو ہوگئی۔10 روز کے دوران پنجاب بھر میں ٹائیفائیڈ بخار کے 20ہزار سے زائد کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب میں کورونا سے زیادہ ٹائیفائیڈ میں اضافہ ہوتاجارہا ہے۔ کورونا اور ٹائیفائیڈ کی ملتی جلتی علامات سیڈاکٹرزتذبذب کا شکار ہیں جبکہ علامات ایک جیسی ہونے کے باعث مریضوں کو بھی پریشانی کا سامنا ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ تدریسی اور نجی ہسپتالوں میں ٹائیفائیڈ کے سینکڑوں مریض رپورٹ ہوئے، ہسپتال ذرائع کے مطابق لاہورکے 5 بڑے ہسپتالوں میں 8 ہزار سے زائد کیس رپورٹ ہوئے، زیادہ کیس سروسز، جناح، میو،جنرل اور چلڈرن ہسپتال میں رپورٹ ہوئے۔یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وی سی پروفیسرڈاکٹرجاوید اکرم نے کہا کہ کورونا اورٹائیفائیڈ سے اموات کی شرح 70فیصد سے زائد ہے، ٹائیفائیڈ سے 40 فیصد اموات ہو رہی ہیں۔رکن ایڈوائزری کورونا گروپ ڈاکٹر صومیہ کا کہنا تھا کہ اموات کی بڑی وجہ ٹائیفائیڈ بخار بھی ہے، رکن ڈاکٹرجاوید حیات نے کہا آلودہ پانی، مضرصحت خوراک، ٹائیفائیڈ کی بڑی وجہ ہیں، بخار،کھانسی،جسم درد،پیٹ کی خرابی ٹائیفائیڈ اورکورونا کی علامات ہیں۔پروفیسرڈاکٹر جاوید حیات کا کہنا تھا کہ کورونا میں بخار ہلکا رہتا ہے۔ ٹائیفائیڈ میں بخار 103 اور 104 تک ہوتا ہے۔

ٹائیفائیڈ بے قابو

مزید :

صفحہ آخر -