جنوبی وزیر ستان، تعمیر تی سکیموں میں ملی بھگت، بھاری بے ضابطگیوں کا انکشاف

جنوبی وزیر ستان، تعمیر تی سکیموں میں ملی بھگت، بھاری بے ضابطگیوں کا انکشاف

  

 ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان سرکاری تعمیراتی محکموں کے اعلی حکام اور بااثر ٹھکیداروں و فنانس ڈیپارٹمنٹ خیبر پختون خواہ کی ملی بھگت سے بڑے پیمانے پر بے قاعدگیوں کا سلسلہ جاری، پائے تکمیل تک ترقیاتی منصوبے پہنچانے والے ٹھیکیدار ادائیگیوں سے محروم،تفصیلات کے مطابق قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان میں مختلف سرکاری تعمیراتی محکمے ایریگیشن، بلڈنگ ڈویژن، ہائے ووے ڈویژن، پبلک ہیلتھ، لوکل گورنمنٹ، زراعت کے زیراہتمام جنوبی وزیرستان میں جاری اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں میں بڑے پیمانے پر بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے، ذرائع کے مطابق علاقے کے بااثر ٹھیکیدار متعلقہ ڈیپارٹمنٹ کے زمداروں کے ساتھ ملکر تین % کمیشن کے عوض ان کے متعلقہ اے ڈی پی نمبرز پر فنڈز ریلیز کردیتے جسمیں فنانس ڈیپارٹمنٹ خیبر پختون خواہ کے کچھ زمدار اہلکار ملوث بتائے جاتے ہیں، جبکہ باقی ماندہ ٹھکیدار جنھوں نے ٹینڈروں میں لئے گئے ترقیاتی منصوبوں پر کام مقررہ وقت سے پہلے مکمل کرنے کے باوجود بھی جائز حقوق سے محروم کردیا جاتا ہے، تعمیراتی محکموں کے اعلی حکام کی ان وارداتوں سے ٹھیکیدار برادری میں شدید اشتعال پایا جاتا ہے ٹھیکیدار یونین رہنما ملک اے ڈی محسود نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تعمیراتی محکموں کے زمداروں اور فنانس ڈیپارٹمنٹ کے خلاف شواہد اکھٹے کرکے اینٹی کرپشن اور دیگر احتسابی اداروں میں کیس رجسٹر کرینگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -