کورونا نے معیشت تباہ کر دی،دفاعی بجٹ عوام پر ظلم،افضل خاموش

کورونا نے معیشت تباہ کر دی،دفاعی بجٹ عوام پر ظلم،افضل خاموش

  

چارسدہ (بیورورپورٹ)مزدور کسان پارٹی کے مرکزی صدر افضل شاہ خاموش نے کہا ہے کہ معیشت کرونا سے پہلے تباہ ہوچکی ہے۔ 1402 ارب دفاع کے لئے مختص کرنا غریب عوام کے ساتھ ظلم ہے۔حکومت کرونا وبا کو ڈھال کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے افضل شاہ خاموش نے حالیہ بجٹ کے حوالے سے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کرونا وبا کو ڈھال کے طور پر استعمال کررہی ہے۔اگر ملک کے مالی حالات اتنے خراب ہیں تو بجٹ کا زیادہ حصہ دفاعی قوتوں کے لیے مختص کرنا غریب عوام سے ظلم ہے۔افضل شاہ خاموش کا کہنا تھا کہ بڑی تعداد میں قومی اداروں کی نجکاری کی باتیں ہورہی ہے اور مزدوروں کی جبری برطرفیاں کی جارہی ہے انہوں نے پاکستان میں موجود سوشلسٹوں سے مطالبہ کیا کہ ڈرائنگ روم سے نکل کر عوام میں انقلاب کے لئے بیداری پیدا کریں کیونکہ عوام موجودہ سرمایہ دارانہ، جاگیردارانہ نظام کے ساتھ ساتھ جرنیلوں سے تنگ آچکی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پچھلے کئی سالوں سے اٹھارویں ترمیم کے زریعے جو پیسے صوبوں کو مل رہے تھے وہ بند ہوچکے ہیں جس کے وجہ سے پختونخوا اور بلوچستان میں موجود یونیورسٹیاں شدید مالی بحران کا شکار ہیں اور اساتذہ کو تنخواہیں بھی نہیں مل رہی۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹیوں کے مالی بحران سارا نقصان طالب علموں کو اٹھانا پڑ رہاہے جس کے وجہ سے زیادہ تر غریب طلباء تعلیم کو ادھورا چھوڑنے پر مجبور ہیں۔افضل شاہ خاموش نے بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کی حالت زار کے حوالے سے کہا کہ پچھلے 4 پانچ مہینوں سے بیرونی ممالک اور خصوصاً خلیج میں مزدور پھنسے ہوئے ہیں جن کے پاس ٹکٹوں کے لئے پیسے نہیں ہے مگر حکومت جو بیرون ملک پاکستانیوں کو معیشت کی ریڑھ کی ہڈی سمجھتی تھی آج بجٹ میں ان غریب مزدوروں کی وطن واپسی کے لیے ایک روپے کا بجٹ بھی نہیں رکھا گیا جو بڑی افسوس کی بات ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -