نوشہرہ،صحافی کے گھر پر چھاپہ، چادر،چاردیواری کی خلاف ورزی

نوشہرہ،صحافی کے گھر پر چھاپہ، چادر،چاردیواری کی خلاف ورزی

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ)پولیس چوکی طارق آباد کی پولیس گردی اور نوشہرہ کے سینئر صحافی واجدعلی کے گھر پر بغیر لیڈی پولیس کے چھاپے کے خلاف نوشہرہ کی صحافی برادری سراپااحتجاج پریس کلب نوشہرہ نے نوشہرہ پولیس کی ہر قسم کوریج سے بائیکاٹ کا اعلان کر تے ہوئے کہا ہے کہ لیڈی پولیس کی عدم موجودگی میں گھروں پر چھاپے پولیس گردی نہیں تو اور کیا ہے ان خیالات کا اظہار نوشہرہ پریس کلب کے ممبران کا ایک ہنگامی اجلاس زیر صدارت پریس کلب صدر حاجی نور خالق خٹک منعقد ہوا اجلاس میں سابق صدر پریس کلب حاجی مشتاق احمد پراچہ سابق جنرل سیکرٹری شہنشاہ، جنرل سیکرٹری حاجی ظہور احمد بخت بسیار، وولی اللہ شاہ، سید قسیم شاہ، تفہیم الرحمان سمیت دیگر صحافیوں نے شرکت کی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شرکاء اجلاس بنے کہا کہ پولیس چوکی طارق آباد کے انچارج اور دیگر اہلکاروں نے نوشہرہ کے سینئر صحافی اور روزنامہ پاکستان پشاور کے بیوروچیف واجد علی کے گھر پر بغیر لیڈی پولیس چھاپہ مارکر بدترین پولیس گردی کی مثال قائم کر دی ہے جس کی ہم بھر پور مذمت کرتے ہیں کیونکہ بغیر لیڈی پولیس کے کسی کے گھر پر چھاپہ مارنا خلاف قانوناور چادر وچاردیواری کی تقدس کو پامال کرنے کے مترادف ہے شرکاء اجلاس نے مزید کہا کہ صاٖی واجد علی بلڈ پریشر اور شوگر کا مریض ہے اور وہ گذشتہ کئی روز سے انتہائی علیل ہے اور بستر پر پڑے ہوئے ہیں لیکن ایسے حالت میں پولیس کا ان کے گھر پر بغیر لیڈی پولیس کے چھاپہ ان کو مزید ذہنی کوفت سے دوچار کر سکتی ہے انہوں نے فیصلہ کیا کہ نوشہرہ پریس کلب نوشہرہ پولیس کی ہر قسم کوریج کے بائیکاٹ کا اعلان کرتا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -