حکومت نے ریلیف نہیں روایتی بجٹ پیش کیا، فاروق ستار

حکومت نے ریلیف نہیں روایتی بجٹ پیش کیا، فاروق ستار

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)ایم کیو ایم پاکستان بحالی کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا ہے کہ حکومت نے ریلیف بجٹ نہیں روایتی بجٹ پیش کیا ہے۔ہفتہ کومقامی عدالت میں بانی ایم کیو ایم کی اشتعال انگیز تقاریر میں سہولت کاری کے 27 مقدمات کی سماعت کے دوران فاروق ستار بھی پیش ہوئے۔اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سربراہ تنظیم ایم کیو ایم پاکستان بحالی کمیٹی ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ حکومت کو ان حالات میں معیشت دوست بجٹ پیش کرنا چاہیے تھا۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس جیسی وبا کے لیے نیا صحت کا نظام وضع کرنا چاہیے، تیل کی قیمت کم ہوئی مگر عوام کو اس کا فائدہ نہیں ہوا۔دوسری جانب بانی ایم کیو ایم کی اشتعال انگیز تقاریر میں سہولت کاری کے مقدمات کی سماعت میں ڈاکٹر فاروق ستار کے علاوہ ایم کیو ایم رہنما عامر خان، قمر منصور، روف صدیقی و دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے۔سماعت کے دوران خواجہ اظہار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ خواجہ اظہار الحسن کورونا کا شکار ہو گئے ہیں۔خواجہ اظہار الحسن کے وکیل کی جانب سے ان کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست اور میڈیکل رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی گئی۔خواجہ اظہار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ خواجہ اظہار الحسن کو کورونا وائرس ہوگیا ہے، وہ پیش نہیں ہوسکتے، انہیں عدالت میں حاضری سے استثنی دیا جائے۔عدالت نے ایم کیو ایم رہنما خواجہ اظہار الحسن کی حاضری سے استثنی کی درخواست منظور کرلی۔عدالت نے آئندہ سماعت پر تمام فریقین کو حاضری یقینی بنانے کا حکم بھی دیا۔

مزید :

صفحہ آخر -