’حکومت نے عوام دشمن بجٹ کی ہیٹرک مکمل کرلی ،بے روزگاری ، مہنگائی کی تیسری لہر آنےوالی ہے‘

’حکومت نے عوام دشمن بجٹ کی ہیٹرک مکمل کرلی ،بے روزگاری ، مہنگائی کی تیسری ...
’حکومت نے عوام دشمن بجٹ کی ہیٹرک مکمل کرلی ،بے روزگاری ، مہنگائی کی تیسری لہر آنےوالی ہے‘

  

دیر(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہاہے کہ عالمی مالیاتی ادارے( آئی ایم ایف) کی خواہش پر ملک میں بے روزگاری ، مہنگائی کی تیسری لہر آنے والی ہے، حکومت نے عوام دشمن بجٹ کی ہیٹرک مکمل کرلی ،اب ان کا آؤٹ ہونا قریب ہے، جس طرح تین سالہ دور حکومت میں کسی ادارے میں بہتری نظر نہیں آرہی ، اسی طرح غریب عوام کے لیے اس بجٹ میں کچھ بھی نظر نہیں آرہا ، وفاقی وزراءکی گفتگو سے لگتاہے کہ وہ کسی اور دنیا میں رہتے ہیں ،موجودہ صورتحال سے ان کا آگاہ نہ ہوناحقائق کو سمجھنے کے لیے کافی ہے ، قومی سلامتی کے دشمن بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے حوالے سے وزیرخارجہ کے بیان سے تشویش میں اضافہ ہوا ، اس حوالے سے حکومت قوم کو اعتماد میں لے اور تمام تر حقائق سے آگاہ کرے ۔ 

ضلع دیرکی تحصیل ثمر باغ میں کارکنان اور تحصیل منڈا کے اجتماع ارکان سے خطاب کرتے ہوئےسراج الحق نے کہاکہ حکومت کا پیش کردہ بجٹ زمینی حقائق کے بالکل منافی ہے، جب تک اللہ اور اس کے رسولﷺ کے احکامات کے خلاف اقدامات ختم نہیں ہوتے ، ملک میں خوش حالی نہیں آسکتی،عوام کا خون نچوڑ کر سود کی صورت میں ادا کیا جارہاہے،گزشتہ اور موجودہ حکومت نے اس سے نجات کے لیے کوئی لائحہ عمل ترتیب نہیں دیا ۔

امیر جماعت اسلامی نےکہاکہ حکومت کےتین سالوں میں مزیددو کروڑ سےزائدلوگ خط غربت کےنیچےزندگی گزارنے پر مجبور ہیں، بے روزگاری میں بے پناہ اضافہ ہواہے اور لاکھوں لوگ اپنے گھروں سے محروم ہوچکے ہیں،تحریک انصاف(پی ٹی آئی) نے اپنے تمام دعوؤں کی ہمیشہ نفی کی ہے ، ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھروں کا اعلان ان کو ہر روز شرمندہ کر رہاہے،روپے کی قدر میں 35 فیصد کمی ہوئی،ایک سال میں کئی دفعہ قیمتوں میں اضافہ ہوا ، مافیاز کا راج رہا جو تاحال جاری ہے،حکومت بالکل بے بس ہے ، آئی ایم ایف اور مافیاز کی موجودگی میں حکومت ربڑ سٹمپ سے زیادہ کچھ بھی نہیں ۔

سراج الحق نےکہاکہ بجٹ میں پٹرولیم لیوی میں اضافہ کومشروط قراردیناعوام کو دھوکہ دینےکےمترادف ہے ، پٹرولیم مصنوعات پر ریکارڈ لیوی ٹیکس حکومتی ظالمانہ اقدام ہے،ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ پٹرولیم مصنوعات پر ناجائز ٹیکسز کا خاتمہ کیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ بجٹ میں زراعت کے شعبہ میں مختص بجٹ کی رقم اونٹ کے منہ میں زیرہ دینے کے مترادف ہے، بجٹ میں کسانوں کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا، زرعی مقاصد کے لیےبجلی پرعائدایف پی اےاورکیوٹی اےجیسےٹیکسز کو ختم کرنےکےوعدہ سےروگردانی کی گئی ہے، کھادوں ، بیجو ں اور زرعی ادویات کی قیمتوں میں مزید اضافہ ہوگا جس سے کسانوں کی پیداوار ی لاگت میں اضافہ ہوگا جو کہ کسانوں پر مزید ظلم کرنے کے مترادف ہے ۔

سراج الحق نے کہاکہ بجٹ میں سرکاری ملازمین مطمئن دکھائی نہیں دے رہا،ای او آئی بی کے پنشنرز کی پنشن میں خاطر خواہ اضافہ نہیں کیا گیا ،آٹا ،چینی ، دالوں سمیت دیگر اشیائے خوردو نوش کی قیمتوں میں کمی کے لیے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے، حکومت بجلی ، پٹرولیم مصنوعات اور گیس کی قیمتوں میں اضافے سے باز رہے اور فوری طور پر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کرے ۔

مزید :

قومی -