سمیڈا کمفار 111 کا لائسنس حاصل کرنے والا پہلا پاکستانی ادارہ بن گیا

سمیڈا کمفار 111 کا لائسنس حاصل کرنے والا پہلا پاکستانی ادارہ بن گیا

لاہور (کامرس رپورٹر) اقوام متحدہ کی تنظیم برائے صنعتی ترقی (یونیڈو)، سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائززڈویلپمنٹ اتھارٹی (سمیڈا) اور حکومت اٹلی کے اشتراک سے قائم انویسٹمنٹ پروموشن یونٹ (آئی پی یو) نے سمیڈا کو عالمی معیار کی تحقیقی رپورٹیں بنانے سے متعلق دینا کا مستند سافٹ فیئر ”کمفار 111“ دے دیا۔ سمیڈا کمفار 111 کا لائسنس حاصل کرنے والا پہلا پاکستانی ادارہ ہے۔ گزشتہ روز یہاں سمیڈا کے صدر دفتر میں اس حوالے سے ایک تقریب منعقد کی گئی، جس میں سمیڈا کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سردار احمد نواز سکھیر متذکرہ سافت وئیر کا لائسنس وصول کیا۔ تقریب میں آئی پی یو کے نیشنل پراجیکٹ ڈائریکٹر عمران چوہدری اور یونیڈو کے انویسٹمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی آفیسر ڈینو فورٹو نیٹو بھی موجود تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سمیڈا کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سردار احمد نواز سکھیرا نے یونیڈو اور حکومت اٹلی کا شکریہ ادا کیا

، جن کی وساطت سے اس سال کے اوائل میں سمیڈا کے افسران کو کمفار 111 کے استعمال کے حوالے سے تربیت فراہم کرنے کیلئے ایک بین الاقوامی تربیت کار کو پاکستان لایا گیا۔

 انہوں نے کہا کمفار 111 کی وجہ سے پری فیزیبلییٹی سٹدیز کی تشکیل میں سمیڈا کی استعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ یونیڈو کے ڈینو فورٹو نیٹو نے بتایا کہ کمفار 111 یونیڈو کا تیار کردہ ایک ایسا کمپیوٹر ماڈل ہے جو صنعتی اور غیر صنعتی منصوبوں کے مالیاتی اور اقتصادی تجزیوں کی تشکیل میں مدد دیتا ہے اور دنیا کے 160 ممالک کے 8 ہزار سے زائد ادارے گزشتہ 30 برس سے اس سافٹ ویئر سے استفادہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئی پی یو کے توسط سے بہت جلد کمفار 111 کی ایڈوانس ٹریننگ کا اہتمام کیا جائے گا، جس میں سمیڈا کے علاوہ دیگر صنعتی اداروں کو بھی شامل کیا جائے گا۔ اس موقع پر سمیڈا کے جنرل مینیجر سنٹرل سپورٹ ڈاکٹر نعیم رو¿ف، جنرل مینیجر مانیٹرنگ اینڈ ایویلیوایشن ڈاکٹر ناصر خان غوری اور جنرل مینیجر آو¿ٹ ریچ عالمگیر چوہدری سمیت متعدد سینئر اہلکار موجود تھے۔

مزید : کامرس